Home / India / بھارتی فوج سب سے زیادہ خودکشیاں کرنے والی فوج کیسے بنی

بھارتی فوج سب سے زیادہ خودکشیاں کرنے والی فوج کیسے بنی

کیا آپ جانتے ہیں کہ پاکستانی فوج میں خودکشی کی شرح زیرو جبکہ بھارتی فوج میں یہ شرح اس قدر زیادہ کیوں ہے؟

انسان کتنا ہی ظالم کیوں نہ ہو مگر اس کا ضمیر اس کے کیے گئے برے کاموں پر ملامت کرتا رہتا ہے، بھارتی فوج اپنے آفیسرز کے کہنے پر کشمیر میں ظلم کر رہی ہے، اور یہ ظلم اس وقت سے ہو رہا ہے جب ہندوستان کی تقسیم ہوئی،اور مسئلہ کشمیر وہیں رہ گیا، بھارتی فوج میں بھی انسان ہیں، مگر جب آفیسرز کا آرڈر آتا ہے تو انہیں وہ آرڈر ماننا پڑتا ہے۔

مگر جو سپاہی ظلم کرتا ہے آہستہ آہستہ نفسیاتی مریض بنتا چلا جاتا ہے، اور ان میں سے کئی اپنی زندگی کا خاتمہ کرنے کا فیصلہ کر لیتے ہیں، پچھلے چند مہینوں میں سینکڑوں بھارتی فوجی خودکشی کر چکے ہیں، یہی حالت امریکی فوج کی اس وقت ہوئی جب عراق میں امریکی فوج نے حملے کیے، معصوم لوگوں کو بے رحمی سے قتل کیا، وہ ظلم جو باقی ساتھی فوجیوں کے ساتھ مل کر عام شہریوں پر کیے گئے، وہ ظلم امریکی فوجیوں کو تنہائی میں یاد آنے لگے۔

پھر امریکی فوجیوں کی ایک بڑی تعداد نفسیاتی امراض کا شکار ہونے لگی، افغانستان میں بھی یہی ہوا، بہت سے امریکی فوجی اپنی زندگیوں سے ہی تنگ آچکے ہیں، ہیروشیما کی مثال بھی آپ کے سامنے ہے، امریکی پائلٹ نے جب ایٹم بم ہیروشیما پر گرایا تو بلندی پر جا کر وہ جگہ دیکھی جہاں ایٹم بم گرایا گیا تھا، وہاں کا منظر دیکھ کر اس پائلٹ نے یہ بات کہی کہ یہ ہم نے کیا کر دیا۔

اب آتے ہیں پاکستانی فوج کی طرف، اصل میں پاکستانی فوجی آفیسرز اپنی فوج کو غیر ضروری کاموں کے لئے استعمال نہیں کرتے، پاکستانی فوج میں شامل ہر پاکستانی شہادت کا جذبہ رکھتا ہے، جہاں آپریشن وغیرہ کرنا ہو وہاں اس بات کا خیال رکھا جاتا ہے کہ کسی نہتے کے ساتھ ظلم و زیادتی نہ ہو۔

دراصل یہ ظلم اور زیادتی ختم کرنے والی فوج ہے، آپ یہاں سے بھی اندازہ لگا سکتے ہیں کہ، بھارتی فوج جب لائن آف کنٹرول کے نزدیک پاکستان کے اطراف میں مسلمان آبادیوں پر گولہ باری کرتی ہے تو بھارتی فوجی یہ مورٹار گولے بھارت میں موجود مسلمانوں کے بچوں کے سکولوں میں بیٹھ کر پاکستانی علاقوں پر داغتی ہے، اسی لئے پاک فوج بہت محتاط ہو کر جوابی کاروائی کرتی ہے تاکہ شیطانی سوچ رکھنے والی بھارتی فوج اپنے مقاصد میں کامیاب نہ ہو۔

پاکستانی فوج پر اکثر بھارتی آلہ کار اور پشتینی ٹولہ یہ الزام لگاتا ہے کہ وزیرستان میں اس فوج نے ظلم ڈھا دیئے اور پشتونوں کے مکانوں پر بم گرائے گئے، دراصل یہ سب جھوٹ ہے، پاک فوج کو جس جس جگہ سے گولیوں کا سامنا ہوا اس جگہ بمباری کی گئی، اور کوشش کی گئی کہ زیادہ سے زیادہ دہشتگردوں کو زندہ پکڑا جائے، تاکہ قائم کی گئی فوجی عدالتوں میں انہیں پیش کیا جائے۔

مگر دہشت گردوں کی یہ فوج ایک ایسی فوج ہے جو کہ قبائلیوں کے روپ دھار کر پاک فوج کے ساتھ لڑتی ہے، ایسے حالات میں کسی بھی ملک کی فوج کے پاس دو ہی راستے بچتے ہیں، یا تو شک گزرتے ہی گولی چلا دی جائے یا پھر لوگوں کی تلاشی لی جائے، اور میرے خیال میں ایک پروفیشنل فوج دوسرا آپشن چنتی ہے، اور ایک مہذب قوم معاشرے کو پاک صاف رکھنے میں مدد دیتی ہے، اسے تلاشی دینے میں کوئی عار یا شرم محسوس نہیں ہوتی، جیسا کہ ہمیشہ چور ہی تلاشی سے ڈرتا ہے۔

وزیرستان میں ایک غیر ملکی جوڑا پاک فوج نے بازیاب کروایا جسے انتہا پسندوں نے اغوا کر رکھا تھا، اس جوڑے کے بقول دنیا کے ترقی یافتہ ممالک کی فوجیں ایسے آپریشنز کرنے میں ناکام ہوتی رہی ہیں مگر پاک فوج نے جب انھیں بازیاب کروایا تو ایک بھی گولی اس جوڑے یا اس کے بچوں کو نہیں لگی، یہاں تک کہ دہشتگردوں اور اس خاندان کے درمیان پاک فوج کے کمانڈوز آگئے، اور انتہائی مہارت سے تمام شدت پسندوں کو ٹھکانے لگایا گیا۔

آج تک کسی بھی پاکستانی فوجی نے خودکشی نہیں کی، اس لحاظ سے بھی پاکستانی فوج دنیا میں اول پوزیشن پر ہے۔ پاکستانی فوج اپنے سپاہیوں کو اچھا کھانا فراہم کرتی ہے، انہیں وقت پر اپنے خاندان سے ملنے دیتی ہے، جس کی وجہ سے پاکستانی فوج کا ہر سپاہی زہنی و جسمانی طور پر تندرست و توانا رہتا ہے۔
اس کے علاوہ پاکستان کی فوج سے فلاحی کام بھی لیے جاتے ہیں، ملک میں کوئی آفت ٹوٹ پڑے، زلزلہ ہو یا سیلاب پاکستانی فوج کے سپاہی پاکستانی شہریوں کو بچانے کے لیے ہر دم تیار رہتے ہیں، ایک وجہ یہ بھی ہے کہ اچھا کام کرکے انسان کو ذہنی سکون حاصل ہوتا ہے۔

Share This

About yasir

Check Also

بھارت کی بڑھتی ہوئی عسکری قوت: کیا خطے کے لیے پریشان کن ہے؟

بھارت کی بڑھتی ہوئی عسکری قوت: کیا خطے کے لیے پریشان کن ہے؟ بھارت کی …