Home / Pakistan Army / فوج نواز شریف کو کیوں نہیں پکڑتی…؟

فوج نواز شریف کو کیوں نہیں پکڑتی…؟

فوج نواز شریف کو کیوں نہیں پکڑتی…؟

آجکل مجھ سے سب سے زیادہ جو سوال پوچها جارہا ہے وہ یہ ہے کہ نواز شریف غدار ہے، فوج کیوں نہیں پکڑ رہی؟

کچھ تو جزبات میں آکر اتنے اندهے ہوجاتے ہیں کہ عصبیت اور لسانیت کا رونا شروع کردیتے ہیں جیسے کوئی کہتا ہے نواز شریف پنجابی ہے اس لیے فوج ایکشن نہیں لے رہی، کوئی عقل کا اندها مہاجروں کا رونا روتے نظر آتا ہے کہ الطاف حسین مہاجر ہے، اس نے غداری کی تو اس کے خلاف ایکشن مگر نواز شریف آزاد …. کیوں؟

میرے پیارے ہم وطنوں ! ہر دور میں دشمن کا کام یہی ہوتا ہے کہ افواہیں پهیلاو، فوج کو مشکوک بناو، عوام کو بتاو کہ فوج سندهیوں، مہاجروں اور بلوچوں کے خلاف ہوتی ہے پنجابیوں کو چهوڑ دیتی ہے، اب تو اس میں پشتونوں کے خلاف ہونے کی افواہیں پهیلائی گئیں. الغرض یہ کہانی گهڑدو وہ کہانی بناو مگر جو اصل آستین کےسانپ ہیں ان کے گناہوں پر پڑدا ڈال دو کیونکہ پاکستانی عوام کا ایک تو حافظہ بہت کمزور ہے دوسرا یہ غداروں سے زیادہ ایمانداروں پر تنقید کرنا اپنا اولین فرض سمجهتی ہے.

میرے ہم وطنوں ! اچهی طرح یاد رکهیں ! فوج صرف سندهیوں، مہاجروں، پشتونوں، بلوچوں یا پنجابیوں کی نہیں بلکہ پورے پاکستانیوں کی ہے، فوج میں ہر صوبے کے شہری شامل ہیں. ہر ذات و رنگ و نسل و مذهب کے لوگ بهی شامل ہیں. فوج کی نظر میں کوئی سندهی، مہاجر یا پنجابی نہیں ہوتا بلکہ سب کے سب صرف پاکستانی ہوتے ہیں.

جہاں تک بات ہے کہ الطاف حسین کے خلاف ایکشن اور نواز آزاد… تو یاد رکهیں الطاف حسین نے کئی مرتبہ کهل کر پاکستان مردہ آباد کا نعرہ لگایا اور ہمارے اولین دشمن بهارت کی خفیہ ایجنسی را کو پاکستان توڑنے کے لیے کهلے عام مدد کے لیے پکارا جب ہی اس کے خلاف سخت ایکشن لیا گیا… مگر نواز شریف نے ابهی تک ایسا کچهہ نہیں کیا. اس نے صرف ایک بیان دیا ہے اور اس پر بهی فوج نے سخت ترین نوٹس لیا ہے. ویسے بیان بهی نیا نہیں بلکہ ایسا بیان وہ اقتدار میں آنے سے پہلے بهی دے چکا تها مگر اسی جزباتی عوام نے اسے ووٹ دیکر ملک کا وزیراعظم بنایا… پهر کوستے فوج ہیں کہ کیوں نہیں پکڑتی ….!

ایک دن بعد ہی نیشنل سکیورٹی کونسل کا اجلاس بلاکر آرمی چیف جنرل باجوہ نے نواز شریف کے چمچے شاہد خاقان کو صاف صاف کہہ دیا کہ جاکر نواز کو سمجهاو ورنہ ہمارا دماغ گهوم گیا تو پهر پانامہ کا چیپٹر 10 بهی کهلے گا اور نواز پر سنگین غداری کا مقدمہ بهی چلے گا اور پهر سرعام پهانسی بهی ہوگی. میاں سانپ کا چمچہ یس سر کہتا ہوا سیدها نواز شریف کے پاس گیا اور سمجهایا کہ میاں سانپ آپ کی بج گئی ہے اور اب یا تو معافی مانگ لو یا پهر بیان واپس لیلو ورنہ آپ تو مروگے ساتهہ میں پارٹی بهی ٹائے ٹینک جہاز کی طرح ڈوب جائے گی.

میاں سانپ نے کہا یار غلطی ہوگئی کچھ کرو، مجهے بچالو، اس کے بعد شاہد خاقان عباسی نے پریس کانفرنس کرکے بونگیاں مارکر میاں سانپ کو یہ کہہ کر بچانے کی کوشش کی کہ نواز شریف کے بیان کو سیاق و سباق سے ہٹ کر غلط انداز میں پیش کیا گیا. بج گئی میاں سانپ کی، اب ڈراونے خواب میں خود کو اڈیالا جیل میں دیکھ رہا ہوگا.

میرے ہم وطنوں ! بے فکر رہو، فوج نواز اور اس کے چمچوں کی چالاکیاں اور مکر و فریب کو اچهی طرح نہ صرف جانتی ہے بلکہ اس کاغذی شیر کی گردن میں پٹا ڈالنا بهی جانتی ہے.
نواز شریف نے یہ الزام پہلی مرتبہ نہیں لگایا بلکہ پہلے بهی لگا چکا ہے.

ڈان لیکس میں بهی پاک فوج پر یہی الزام لگایا گیا تها کہ فوج دہشت گردوں کی مدد کرتی ہے، جب ڈان لیکس پر فوج نے میاں سانپ کو گردن سے پکڑا تب یہ آستین کا سانپ آرمی چیف کی منتیں کر رہا تها کہ خدارا معاف کردیجیے آپ کی بهی بیٹی ہے اس لیےمیری بیٹی مریم کو بهی معاف کردیں تو آرمی چیف نے معاف نہیں کیا تها بلکہ معاملہ سپریم کورٹ پر چهوڑ دیا تها اور کورٹ نے جو رپورٹ دی وہ بهی اس کی بیٹی مریم کے خلاف آئی تهی مگر قربانی کا بکرا پرویز رشید کو بنایا گیا تها.

ابهی وہ رپورٹ بهی یہ حرام خور دبائے بیٹهے ہیں. یہ رپورٹ بهی سمجهیں آنے ہی والی ہے اور پانامہ کیس کا چیپٹر 10 بهی اگر سپریم کورٹ کهول دے تو بہتر ہے.

اس کے علاوہ نواز کے موجودہ بیان کو آپ ڈان لیکس 2 سمجهیں اور اچهی طرح دماغ میں بٹهالیں کہ فوج کبهی بهی غداروں کو معاف نہیں کرتی.

لیکن فیصلے جزبات میں نہیں ہوتے کیونکہ پاکستانی عوام میں شعور بہت کم ہے. فوج پہلے بهی ایسے فیصلے کرچکی ہے مگر عوام پهر بهی انہیں سیاسی غداروں کو ووٹ دیکر یا بیچ کر ملک کا حکمران بناکر فوج کا بهی سربراہ بنادیتی ہے.

اس لیے اس دفعہ فیصلے جزبات سے کرنے کے بجائے عقل سے سوچ سمجھ کر کیے جارہے ہیں.

جو جزباتی بچے کہتے ہیں کہ فوج نواز شریف کو گرفتار کیوں نہیں کرتی ان فیس بکی دانشوروں اور تنقیدی مخلوق کے چودہ طبق روشن کرنے کے لیے ان سے چند سوال پوچهتا ہوں، وہ الگ بات ہے کہ جواب کوئی بهی نہیں دے گا سب تتر بتر ہوکر صرف شور شرابہ ہی کریں گے کہ فوج نواز شریف کو کیوں نہیں پکڑتی.

جنرل ضیاءالحق نے ایک غدار، سقوط ڈهاکہ کے اہم کردار. ذوالفقار علی بهٹو کو پهانسی دی. جب بهٹو مرا تو کیا ہوا ؟ عوام نے پهر  اس کی بیٹی بینظیر کو جزبات میں آکر ووٹ دیکر فوج کا بهی حکمران بنادیا.

بهٹو کو تو عوام آج تک نہیں مارسکی بلکہ الٹا آج بهی اس کے نام پر “زندہ ہے بهٹو زندہ ہے” کے نعرے پر جزبات میں آکر ووٹ دیتی آرہی ہے، کیا اس کی قصور وار بهی فوج ہے یا یہ جزباتی جاہل عوام؟

بهٹو کے بعد اس کی بیٹی بینظیر مری تو کیا ہوا؟

عوام نے ایک مرتبہ پهر جزبات میں آکر اس کے شوہر آصف زرداری کو ووٹ دیکر ملک سمیت پاک فوج کا بهی سپریم کمانڈر بنادیا اور پهر اسی زرداری نے اسامہ بن لادن جیسے جعلی ایبٹ آباد حملے کروانے میں امریکیوں کی مدد کی اور امریکی خفیہ ایجنسی “سی آئی اے” کو میموگیٹ (پاک فوج اور آئی ایس آئی کے خلاف خفیہ خط) لکھ کر یہود و نصارہ سے پاک فوج اور آئی ایس آئی کے خلاف مدد مانگی. زرداری کو ووٹ دیکر صدر پاکستان بنانے کی قصور وار بهی پاک فوج ہے یا یہ جزباتی جاہل عوام؟

اب آپ چاہتے ہیں کہ نواز شریف بهی جلد مرے تاکہ یہی عوام اگلے انتخابات میں رو رو کر پهر اس کی بیٹی مریم کو جزبات میں آکر ملک کا حکمران بنادے اور پهر مریم حکومت میں آکر فوج اور آئی ایس آئی کو ختم کردے…؟

تو میرے ہم وطنوں ! فیصلہ کرلو کہ اس دفعہ بهی وہی پرانی غلطی دہرانی ہے یا کچھ نیا کرنا ہے؟ اگر نیا کرنا ہے تو فوج کو کوسنا بند کرو اور جزبات میں آکر غداروں کو بار بار ووٹ دیکر ملک کا حکمران بنانے پر اپنے آپ کو لعنت ملامت کرو کیونکہ ان غداروں کو ملک کا حکمران فوج نے نہیں بلکہ آپ یعنی عوام نے بنایا ہے.

اب فوج کو اپنا کام کرنے دو، جزبات میں آکر شور شرابہ نہ کریں کہ فوج نواز شریف کو کیوں نہیں پکڑتی. صبر کیجیے، فوج غداروں کو کبهی معاف نہیں کرتے اور میاں سانپ کو بهی معافی دینے کا کوئی ارادہ نہیں ہے. اگر فوج بهی آپ کی طرح جزبات میں آکر فیصلے کرتی تو پاک فوج اور آئی ایس آئی دنیا میں نمبر ون نہ ہوتے.

فیصلے جزبات میں آکر نہیں بلکہ کهوپڑی میں موجود عقل سے کیے جاتے ہیں. اب اپنی تنقید بند کیجیے، اپنی محسن پاک فوج اور دنیا کی نمبر ون ایجنسی آئی ایس آئی پر مکمل بهروسہ رکهیے، اس فوج نے وطن کی حفاظت کی قسم کها رہی ہے. آپ کو کوئی شک نہیں ہونا چاہیے بلکہ افواج کے ہر قدم پر ان کا ساتهہ دینا چاہیے.

ضروری نہیں کہ فوج جو کچھ غداروں کے خلاف کر رہی ہے وہ آپ کو نظر بهی آئے، فوج اپنا کام ہمیشہ خفیہ کرتی ہے جو عوام کو نظر نہیں آتا اس لیے ایسا ہرگز مت سمجهیں کہ فوج نواز شریف کے خلاف کچھ نہیں کر رہی….!

امید ہے اس تحریر سے آپ کے گلے شکوے دور ہوگئے ہوں گے، اس تحریر کو شیئر کرکے جزباتی عوام کے بهی چودہ طبق روشن کرنے میں اپنا کردار ادا کیجیے. جزاک اللہ

Share This

About yasir

Check Also

پاک فوج کے آفیسرز کو تربیت نہ دینے پر امریکہ کو کیا نقصانات اٹھانا پڑینگے

امریکا کی طرف سے پاکستانی فوج کی ملٹری ٹریننگ پروگرام کی فنڈنگ کم کرنے پر …