Home / International / چین اور پاکستان مل کر بھارت کو دنیا میں اکیلا کر رہے ہیں۔ بھارتی میڈیا

چین اور پاکستان مل کر بھارت کو دنیا میں اکیلا کر رہے ہیں۔ بھارتی میڈیا

پورے بھارت میں اس وقت یہ کھلبلی مچی ہوئی ہے کہ چین اور پاکستان نیپال میں اپنا اثر رسوخ بڑھا رہے ہیں، بھارتی میڈیا کے مطابق چین نیپال جیسے ملک جو کہ بھارت کا دیرینہ دوست ہے میں اس قدر اثر رسوخ بڑھا رہا ہے کہ نیپال بھارت کے ہاتھوں سے نکلا جا رہا ہے۔
nepal india

بھارتی میڈیا کے مطابق یہ بات بھارتی حکومت کے لیے پریشان کن ہے کہ چین نیپال میں اپنا اثر و رسوخ بڑھاتے ہوئے نیپال اور چین کے درمیان ٹرین سروس شروع کر چکا ہے۔ اس کے علاوہ چین نے نیپال کو جدید ہتھیار دینے کا بھی وعدہ کر دیا ہے، چین نیپال کو تیل کے ذخائر ڈھونڈنے میں بھی مدد دے گا۔

بھارتی میڈیا کا کہنا ہے کہ چین یہ سب اس لئے کر رہا ہے کہ نیپال بھارت پر انحصار کم سے کم کر دے، بھارتی میڈیا اس وقت چلا اٹھا جب چین نے نیپال کو قرضہ دینے کا بھی اعلان کر دیا، جس پر بھارتی میڈیا کا کہنا ہے کہ ڈریگن نیپال پر قبضہ کر لے گا۔ چین جب کسی خطے یا ملک کے ساتھ اپنے تعلقات استوار کرتا ہے تو بھارتی میڈیا کا یہی طریقہ کار ہوتا ہے کہ چین اس خطے یا ملک پر قبضہ کر لے گا۔
china nepal new

پاکستان اور چین نے جب سی پیک منصوبے کی بنیاد رکھی تو اسی بھارتی میڈیا نے یہی باتیں کی تھیں کہ چین پاکستان پر قبضہ کر لے گا، جو کہ بعد میں صرف اور صرف پراپیگنڈہ ثابت ہوا۔

اصولی طور پر دیکھا جائے تو چین کا پاکستان اور نیپال اور بھوٹان کے ساتھ بہتر تعلقات کرنا چین کے اپنے مفاد میں ہے، کیونکہ ان ممالک کی سرحدیں چین کی سرحدوں سے ملتی ہیں، اس لیے ان ممالک کے ساتھ سفارتی تعلقات بہتر کرنا چین کا حق ہے، بھارتی میڈیا کو یہ تو نظر آرہا ہے کہ چین نیپال اور بھوٹان کے ساتھ اپنے تعلقات زیادہ بہتر کر رہا ہے مگر یہ نظر نہیں آ رہا کہ بھارت خود افغانستان میں کیا کر رہا ہے۔
indian in afghanistan

بھارت اور افغانستان کی سرحدیں بھی نہیں ملتیں پھر بھارت نے افغانستان میں غیرضروری سفارتخانے اور ٹریننگ کیمپ کیوں قائم کر رکھے ہیں؟ اصل میں بھارت کا افغانستان میں اپنا اثرورسوخ بڑھانے کا مقصد صرف یہی ہے کہ پاکستان کی افواج کو افغانستان کے بارڈر پر مصروف رکھا جائے، اس کے علاوہ پاک افغان باڈر کے ذریعے بھارت اپنے ٹریننگ کیمپس میں تربیت یافتہ دہشتگرد پاکستان میں بھیجتا ہے، جس کے واضح ثبوت مل چکے ہیں۔

یعنی بھارت تعلقات کی آڑ میں چاہے دہشتگردی کرتا پھرے، چین کا مفاد اسی بات میں ہے کہ اس کے پڑوسی ممالک، خاص طور پر جن کی سرحدیں چینی سرحدوں سے ملتی ہیں، ترقی یافتہ ہوں گے تو اس کا براہ راست چین کو فائدہ ہوگا، اور یہ بات چینی حکام اچھی طرح سے سمجھتے ہیں۔
pakistan india

مگر بھارت ایک دوسری پر عمل پیرا ہوتا ہے، اور وہ یہ ہے کہ اپنے کمزور پڑوسی ممالک کو دبدبے میں رکھنا، اپنے پڑوسی ممالک کی مجبوریوں سے فائدہ اٹھانا، نیپال بھوٹان سری لنکا یہ ممالک بھارتی رویئے سے سخت تنگ ہیں، یہاں تک کہ بنگلہ دیش بھی بھارتی نرغے میں آ چکا ہے۔

چین نے بڑی نفاست سے بنگلہ دیش کو بھی اپنے ساتھ ملا لیا ہے، بنگلہ دیش کو ہتھیار چین فراہم کر رہا ہے، جس پر بھارت بری طرح سے نالاں ہے، یوں پاکستان کو دنیا میں اکیلا کرنے کے خواب دیکھنے والا بھارت خود چین اور پاکستان کے ہاتھوں اپنے دیرینہ دوستوں سے ہاتھ دھو بیٹھا ہے۔
Bangladesh Buying from china

اگر آپ دنیا کا نقشہ دیکھیں تو آپ اس بات کو بخوبی سمجھ سکتے ہیں کہ یہ ممالک جن کی ہم نے نشاندہی کی ہے اگر یہ چین کے حق میں بہتر ہو جائیں اور بھارت کے معاملے پر ان کا رویہ سخت ہو جائے تو چین کو جس قدر فائدہ ہوگا، بھارت کو اتنا ہی نقصان ہوگا۔
china nepal and india

جیسے کہ ترقی یافتہ پاکستان کے لیے افغانستان اور پاکستان کے درمیان دوستانہ تعلقات انتہائی ضروری ہیں، جس میں سب سے بڑی رکاوٹ اس وقت بھارت اور امریکا ہیں۔

جب کہ اس بات کی اہمیت کا اندازہ چین اور روس کو ہوچکا ہے، اور وہ دونوں ممالک افغانستان کے حالات بہتر کرنے میں بھی دلچسپی رکھتے ہیں، یعنی اس خطے میں موجود کمزور ممالک جن پر بھارت اپنا اثر و رسوخ رکھتا تھا آج وہ ممالک چین پر انحصار کرنے لگے ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ بھارت کی پریشانی میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے، اس وقت یہ پریشانی عروج پر ہے کیونکہ پاکستانی وزیراعظم نے بھی نیپال کا دورہ کر لیا ہے۔

pakistani in nepal

Share This

About yasir

Check Also

نریندر مودی’ ٹرمپ اور مسلمان

ایک طرف امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے امریکہ میں مسلمانوں کی آمد کو بند اور …