Home / International / امام مہدی رحمہ اللہ کا ظہور اورظالم بشار الاسد

امام مہدی رحمہ اللہ کا ظہور اورظالم بشار الاسد

امام مہدی رحمہ اللہ کے ظہور سے متعلق احادیث تو آپ نے یقیناً پڑھی ہوں گی لیکن یہ بات بہت کم لوگ جانتے ہیں کہ امام مہدی سے پہلے سفیانی نامی حکمران کے ظہور کی پیشنگوئیاں بھی موجود ہیں جو درحقیقت امام مہدی کا دشمن ہو گا۔ اسلئے ہم کہہ سکتے ہیں کہ امام مہدی کا ظہور سفیانی (اپنے دشمن) کے ظاہر ہونے کے کچھ ہی سالوں بعد ہو گا۔

سفیانی کے ظہور کہ بارے میں ایک حدیث ملاحظہ کیجیے:

(حديث مرفوع) حَدَّثَنَا أَبُو مُحَمَّدٍ أَحْمَدُ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ الْمُزَنِيُّ ،ثَنَا زَكَرِيَّا بْنُ يَحْيَى السَّاجِيُّ ، ثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ إِسْمَاعِيلَ بْنِ أَبِي سَمِينَةَ ، ثَنَا الْوَلِيدُ بْنُ مُسْلِمٍ ، ثَنَاالأَوْزَاعِيُّ ، عَنْ يَحْيَى بْنِ أَبِي كَثِيرٍ ، عَنْ أَبِي سَلَمَةَ ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ رَضِيَ اللَّهُ عَنْهُ ،
قَالَ : قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَآَلِهِ وَسَلَّمَ : ” يَخْرُجُ رَجُلٌيُقَالُ لَهُ : السُّفْيَانِيُّ فِي عُمْقِ دِمَشْقَ ،
وَعَامَّةُ مِنْ يَتْبَعُهُ مِنْ كَلْبِ ، فَيَقْتُلُ حَتَّى يَبْقَرَ بُطُونَ النِّسَاءِ ،
وَيَقْتُلُ الصِّبْيَانَ ،
فَتَجْمَعُ لَهُمْ قَيْسٌ ، فَيَقْتُلُهَا حَتَّى لا يُمْنَعُذَنَبَ تَلْعَةٍ ،
وَيَخْرُجُ رَجُلٌ مِنْ أَهْلِ بَيْتِي فِي الْحَرَّةِ ، فَيَبْلُغُ السُّفْيَانِيَّ ،
فَيَبْعَثُ إِلَيْهِ جُنْدًا مِنْ جُنْدِهِ ،
فَيَهْزِمُهُمْ ، فَيَسِيرُ إِلَيْهِ السُّفْيَانِيُّ بِمَنْ مَعَهُ ،
حَتَّى إِذَاصَارَ بِبَيْدَاءَ مِنَ الأَرْضِ ، خُسِفَ بِهِمْ ،
فَلا يَنْجُو مِنْهُمْ إِلا الْمُخْبِرُ عَنْهُمْ ” .
هَذَا حَدِيثٌ صَحِيحُ الإِسْنَادِ عَلَى شَرْطِ الشَّيْخَيْنِ ،
وَلَمْ يُخْرِجَاهُ(بحوالہ: مستدرک حاکم)

ترجمہ:
“دمشق(ملک شام) کی گہرائی سےایک آدمی نکلے گا جسے سفیانی کہا جائے گا، اسکی پیروی کرنے والے زیادہ تر لوگ کلب قبیلےکے ہوں گے، یہ عورتوں کے پیٹ چاک کر کے لڑکوں کو قتل کرے گا، قیس قبیلے کے لوگ اسکا مقابلہ کریں گے، یہاں سے لڑے گا اور وہاں سے روک نہیں سکیں گے،
پھر میرے گھرانے کا ایک آدمی (یعنی امام مہدی رحمہاللہ) حرّہ پہنچے گا،
جب سفیانی کو پتہ چلے گا تو وہ اپنے لشکروں میں سے ایک لشکر بھیجے گا، جسے مہدی شکست دے گا، پھر سفیانی کے ساتھ جو لوگ بھی ہوں گے انہیں مہدی کیطرف بھیجےگا، جب وہ صحرا والی زمین پر پہنچیں گے تو زمین انہیں نگل لے گی، ان میں سے کوئی نہ بچے گا سوائے خبر دینے والے کے۔”

قارئین! سفیانی ایک لقب ہے اُس دشمن کا اصل نام کچھ بھی ہو سکتا ہے ٹھیک اسی طرح جیسے مہدی ایک لقب ہے اور احادیث کے مطابق مہدی رحمہ اللہ کا اصل نام محمد بن عبداللہ ہو گا۔ حالات و واقعات بتاتے ہیں کہ امام مہدی کے ظہور کا وقت انتہائی قریب آ پہنچا ہے اور ایسا لگتا ہے کہ سفیانی (دشمن مہدی) کا ظہور بھی ہو چکا ہے۔
Bashar ul asad

کیا موجودہ شامی صدر بشار الاسد ہی سفیانی ہے؟

 شامی صدر بشارالاسد کا تعلق قبیلہ کلب سے ہے (ملاحظہ کیجیے ثبوت نمبر ایک اور ثبوت نمبر دو) نیز بشارالاسد کے ماننے والے (پیروکاروں) کی اکثریت کا تعلق بھی قبیلہ کلب سے ہی ہے (ثبوت ملاحضہ ہو)۔

مزید یہ کہ بشارالاسد اور اسکے پیروکاروں نے شام کے مسلمانوں پر جو ظلم ڈھائے ہیں وہ بھی کسی سے ڈھکے چھپے نہیں اگر تحقیق کرنی ہو تو انٹرنیٹ پر معلومات کےانبار موجود ہیں۔

 بشار الاسد اور امام مہدی کی لڑائی؟

اگر واقعی بشار الاسد ہی سفیانی ہے (جیسا کہ حالات و واقعات) سےپتہ چلتا ہے تو یقیناً مہدی رحمہ اللہ کا ظہور بھی عنقریب ہونے ہی والا ہے۔

آئیے اس بات پر غور کرتے ہیں کہ کیا بشار الاسد اور امام مہدی کی لڑائی ہو سکتی ہے؟ بشار الاسد اور اسکے پیروکاروں کا تعلق شیعہ مسلک سے ہے جنہیں ایران اور پوری دنیا کے شیعوں کی حمایت حاصل ہے۔ جبکہ دوسری طرف احادیث کے مطابق مہدی کا تعلق مدینہ منورہ سے ہو گا اور وہ نبی صلی اللہ علیہ وسلم کی نسل میں سے ہوں گے۔

(حديث مرفوع) قَالَ أَبُو دَاوُد : حُدِّثْتُ عَنْ هَارُونَ بْنِ الْمُغِيرَةِ ، قَالَ : حَدَّثَنَا عَمْرُو بْنُ أَبِي قَيْسٍ ، عَنْ شُعَيْبِ بْنِ خَالِدٍ ، عَنْ أَبِي إِسْحَاق ، قَالَ : قَالَ عَلِيٌّرَضِيَ اللَّهُ عَنْهُ : وَنَظَرَ إِلَى ابْنِهِ الْحَسَنِ ، فَقَالَ : إِنَّ ابْنِي هَذَا سَيِّدٌ كَمَا سَمَّاهُ النَّبِيُّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ وَسَيَخْرُجُ مِنْ صُلْبِهِ رَجُلٌ يُسَمَّى بِاسْمِ نَبِيِّكُمْ يُشْبِهُهُفِي الْخُلُقِ وَلَا يُشْبِهُهُ فِي الْخَلْقِ ، ثُمَّ ذَكَرَ قِصَّةً يَمْلَأُ الْأَرْضَ عَدْلًا ، وَقَالَ هَارُونُ : حَدَّثَنَا عَمْرُو بْنُ أَبِي قَيْسٍ ، عَنْ مُطَرِّفِ بْنِ طَرِيفٍ ، عَنْ أَبِي الْحَسَنِ، عَنْ هِلَالِ بْنِ عَمْرٍو ، قَالَ : سَمِعْتُ عَلِيًّا رَضِيَ اللَّهُ عَنْهُ يَقُولُ ، قَالَ النَّبِيُّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ : ” يَخْرُجُ رَجُلٌ مِنْ وَرَاءِ النَّهْرِ يُقَالُ لَهُ الْحَارِثُ بْنُحَرَّاثٍ عَلَى مُقَدِّمَتِهِ رَجُلٌ يُقَالُ لَهُ مَنْصُورٌ ي
ُوَطِّئُ أَوْ يُمَكِّنُ لِآلِ مُحَمَّدٍ كَمَا مَكَّنَتْ قُرَيْشٌ لِرَسُولِ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ وَجَبَ عَلَى كُلِّ مُؤْمِنٍ نَصْرُهُ أَوْقَالَ إِجَابَتُهُ ” (بحوالہ ابوداؤد)

ترجمہ: “حضرت علی رضی اللہ عنہ نے اپنے بڑے بیٹے حسن رضی اللہ عنہ کو دیکھ کر فرمایا کہ میرے اس بیٹے کی نسل سے ایک آدمی ہو گا جو محمد ﷺ کا ہم نام ہو گا ، وہ اخلاق میں انہی کے مشابہ ہو گا مگر شکل میں مشابہ نہیں ہو گا ، پھر قصہ بیان کیا کہ وہ زمین کو عدل سےبھر دے گا۔”

 نوٹ: حضرت علی رضی اللہ عنہ کو اس پیشگوئی سے خود نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے وحی کی بدولت آگاہ کیا تھا کیونکہ غیب کا علم صرف اللہ ہی کے پاس ہے۔

 (حديث مرفوع) حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ الْمُثَنَّى ، حَدَّثَنَا مُعَاذُ بْنُ هِشَامٍ ، حَدَّثَنِي أَبِي ، عَنْ قَتَادَةَ ، عَنْ صَالِحٍ أَبِي الْخَلِيلِ ، عَنْ صَاحِبٍ لَهُ ، عَنْ أُمِّ سَلَمَةَ زَوْجِالنَّبِيِّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ ، عَنِ النَّبِيِّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ ، قَالَ : ” يَكُونُ اخْتِلَافٌ عِنْدَ مَوْتِ خَلِيفَةٍ فَيَخْرُجُ رَجُلٌ مِنْ أَهْلِ الْمَدِينَةِ هَارِبًا إِلَى مَكَّةَ فَيَأْتِيهِنَاسٌ مِنْ أَهْلِ مَكَّةَ فَيُخْرِجُونَهُ وَهُوَ كَارِهٌ ، فَيُبَايِعُونَهُ بَيْنَ الرُّكْنِ وَالْمَقَامِ وَيُبْعَثُ إِلَيْهِ بَعْثٌ مِنْ أَهْلِ الشَّامِ ، فَيُخْسَفُ بِهِمْ بِالْبَيْدَاءِ بَيْنَ مَكَّةَ ، وَالْمَدِينَةِ فَإِذَارَأَى النَّاسُ ذَلِكَ أَتَاهُ أَبْدَالُ الشَّامِ وَعَصَائِبُ أَهْلِ الْعِرَاقِ فَيُبَايِعُونَهُ بَيْنَ الرُّكْنِ وَالْمَقَامِ ثُمَّ يَنْشَأُ رَجُلٌ مِنْ قُرَيْشٍ أَخْوَالُهُ كَلْبٌ ، فَيَبْعَثُ إِلَيْهِمْ بَعْثًا فَيَظْهَرُونَعَلَيْهِمْ وَذَلِكَ بَعْثُ كَلْبٍ وَالْخَيْبَةُ لِمَنْ لَمْ يَشْهَدْ غَنِيمَةَ كَلْبٍ فَيَقْسِمُ الْمَالَ وَيَعْمَلُ فِي النَّاسِ بِسُنَّةِ نَبِيِّهِمْ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ وَيُلْقِي الْإِسْلَامُ بِجِرَانِهِ إِلىالْأَرْضِ فَيَلْبَثُ سَبْعَ سِنِينَ ثُمَّ يُتَوَفَّى وَيُصَلِّي عَلَيْهِ الْمُسْلِمُونَ ” ، قَالَ أَبُو دَاوُد : قَالَ بَعْضُهُمْ : عَنِ هِشَامٍ تِسْعَ سِنِينَ ، وَقَالَ بَعْضُهُمْ سَبْعَ سِنِينَ ، حَدَّثَنَاهَارُونُ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ ، حَدَّثَنَا عَبْدُ الصَّمَدِ ، عَنْ هَمَّامٍ ، عَنْ قَتَادَةَ بِهَذَا الْحَدِيثِ ، وَقَالَ تِسْعَ سِنِينَ ، قَالَ أَبُو دَاوُد : وَقَالَ غَيْرُ مُعَاذٍ ، عَنِ هِشَامٍ تِسْعَ سِنِينَ ،حَدَّثَنَا ابْنُ الْمُثَنَّى ، حَدَّثَنَا عَمْرُو بْنُ عَاصِمٍ ، حَدَّثَنَا أَبُو الْعَوَّامِ ، حَدَّثَنَا قَتَادَةُ ، عَنْ أَبِي الْخَلِيلِ ، عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ الْحَارِثِ ، عَنْ أُمِّ سَلَمَةَ ، عَنِ النَّبِيِّ صَلَّىاللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ بِهَذَا الْحَدِيثِ وَحَدِيثُ مُعَاذٍ أَتَمُّ . (بحوالہ ابوداؤد)

ترجمہ: “ایک خلیفہ کی موت پر اختلاف ہوگا ، پھر مدینے کا ایک آدمی نکلے گا اور مکہ بھاگ جائے گا، پھر مکہ کے لوگ اس کے پاس آئیں گے اور اسے امامت کے لیے کھڑا کریں گےحالانکہ وہ یہ نہیں چاہتا ہوگا اور وہ اس کے ساتھ حجر اسود اور مقام ابراہیم کےدرمیان بیعت کریں گے۔
ibrahim

آج سعودی عرب کےمقامی لوگوں کی اکثریت سلفی عقیدے کی حامل ہے جنہیں شیعہ اپنا سب سے بڑا دشمن سمجھتے ہیں اور انہیں وہابی اور نجدی جیسے ناموں سے پکار کر ان کی تحقیر کرتے ہیں، تو یقیناً اگر مدینہ منورہ سے مہدی کا ظہور ہوتا ہے تو شعیہ حضرات انہیں اپنے مسلک سے تعلق نہ ہونے کیوجہ سے رد کر دیں گے اور جعلی مہدی قرار دے کر ان سے جنگ کےلئے بھی امادہ ہو سکتے ہیں، ایسی صورت حال میں بشارالاسد کی قیادت میں شیعہ حضرات کا مہدی رحمہ اللہ سےجنگ کرنا عین ممکنات میں سے دکھائی دیتا ہے جسکی نبی صلی اللہ علیہ وسلم نےپیشگوئی کی تھی۔

اللہ سے دعا ہے کہ اللہ ہمیں فتنوں کےاس دور میں اس جماعت سے ملا دے جسے نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے“فرقہ ناجیہ” کہا تھا جو تہتر فرقوں میں سے نجات پانے والی واحد جماعت ہوگی۔ آمین ثم آمین
Dajjal is coming

 بشار الأسد کے بارے میں یہ ایک مصدقہ بات ہے. اسکی تصدیق ایک شامی بہن نے کی تھی. مکرم شامی بہن ان عربوں میں تھی جن کے آباء نے یورپ ہجرت کی تھی.
شام و خلیجی ممالک میں انتشار و فتنہ پھیلنے پر، غیرت مند عربوں کی ایک تعداد نے امریکہ و یورپ چھوڑ کر دارالحرب ہجرت کی.
اسی بہن کی انتہائی جاندار پروفائل سے مجھے شیخ انور العولقی رحمہ اللہ کے بارے میں پتہ چلا تھا. میرے سوال کرنے پر انہوں نے بتایا تھا کہ بشار الأسد بنو کلب سے ہے اور سفیانی ہے.
Dajjal Suporter

Share This

About yasir

Check Also

پاکستان سعودی عرب کی سلامتی کی خاطر کیا کچھ کرسکتا ہے۔

پاکستان میں عسکری اور سیاسی قیادت اس بات پر متفق ہیں کہ یمن میں جو …