Home / Pakistan Army / نصر میزائل اور ڈرون کا کمبی نیشن

نصر میزائل اور ڈرون کا کمبی نیشن

 آج میں آپ کو پاکستان کے نصر میزائل اور پاکستانی ڈرون کے کمبی نیشن کے بارے میں بتاؤں گا۔ یعنی کہ پاکستانی فوج بھارتی فوج کی پیش قدمی کو کیسے ان دو ہتھیاروں کو بیک وقت استعمال کرتے ہوئے نہ صرف روک سکتی ہے بلکہ بھارت اگر بڑی سے بڑی فوج بھی لے آئے تو پاک آرمی چند سیکنڈز میں اسے کوئلے میں تبدیل کر سکتی ہے۔

جیسا کہ آپ سب اس بات سے آگاہ ہیں کہ بنگلہ دیش کی علیحدگی کے بعد بھارت کولڈ سٹارٹ ڈاکٹرائن منصوبے کے تحت پاکستان کو مزید ٹکڑوں میں تبدیل کرنا چاہتا تھا، اگر آپ بھارت کے اس منصوبے سے آگاہ نہیں تو میں آپ کو اس کے بارے میں بتا دیتا ہوں۔

بھارت کولڈ سٹارٹ ڈاکٹرائن منصوبے کے تحت پاکستان کے ایک خاص مقام پر پوری قوت سے حملہ کرکے اپنی فوج بکتر بند گاڑیوں اور جنگی ٹینکوں کو افغانستان کے بارڈر تک لے جانا چاہتا تھا، جس کے نتیجے میں پاکستان کے دو ٹکڑے ہوجاتے۔اس خاص منصوبے کے لیے بھارت اربوں ڈالر خرچ کر چکا تھا، اور اپنے فوجی دستوں کو کولڈ سٹارٹ ڈاکٹرائن کے تحت ٹریننگ بھی دے چکا تھا۔
Pakistan vs indiacold start doctrine

مگر بھارت اس مشن میں کامیاب نہ ہوسکا، کیوں کہ پاکستان کی خفیہ ایجنسی آئی ایس آئی کو بھارت کے اس خفیہ منصوبے کا بروقت پتا چل گیا تھا،جب یہ منصوبہ فائلوں اور جنگی مشقوں میں ہی تھا، اب ہمیں ایک ایسے ہتھیار کی ضرورت تھی جو ایٹم بم جیسی تباہی کرسکتا، مگر تابکاری سے بھی پاک ہو، جسے پاکستانی آرمی اپنی حدود میں بھی استعمال کر سکتی۔

چنانچہ پاکستانی سائنسدانوں کی محنت رنگ لے آئی اور انتہائی قلیل وقت میں دو فٹ بال جتنا نیوٹرون بم بنا لیا گیا، اس کی خاص بات یہ ہے کہ یہ بم جس جگہ پھینکا جاتا ہے وہ جگہ کچھ ہی دیر میں قابل استعمال ہو جاتی ہے، کیوں کہ نیوٹرون بم کے پھٹنے سے تابکاری نہیں پھیلتی۔ جبکہ پاکستان کے دوسرے میزائل جہاں استعمال کیے جائیں وہ جگہ مکمل طور پر تباہ ہو جاتی ہے، اور اس کے بعد اس جگہ سے زندگی ختم ہو جاتی ہے،یہاں تک کہ زمین گھاس اگانا بھی چھوڑ دیتی ہے، اور آس پاس کے علاقے بھی اس سے متاثر ہو سکتے ہیں۔

نیوٹرون بم جوکہ نصر میزائل میں نصب کیا گیا ہے بھارتی کولڈسٹارٹ ڈاکٹرائن کو ہمیشہ کے لئے دفن کرنے میں اہم ثابت ہوا، کیونکہ نصر میزائل سے بھارتی فوج کسی طرح سے بھی محفوظ نہیں رہ سکتی، نصر میزائل کے حملے کے بعد موٹی موٹی لوہے کی چادریں بھی فوجیوں کو محفوظ نہیں رکھ پاتیں، جنگی ٹینک اور بکتربند گاڑیاں اس میزائل کے آگے کچھ بھی نہیں۔
 battle tank

نصر میزائل کو دشمن فوجی دستے کے تقریبا پچاس میٹر اوپر فضا میں استعمال کیا جاتا ہے، ایک نیوٹرون بم پھٹنے سے تقریبا تین کلومیٹر کے ایریا میں نیوٹرون بارش کی طرح برستے ہیں، اور وہاں موجود ہر زندہ جسم کی فوری موت واقع ہوجاتی ہے،یہاں تک کہ نیوٹرون ٹینکوں ، غاروں یا سیمنٹ کی موٹی دیواروں میں بھی گھس جاتے ہیں، جبکہ پاکستان کے پاس دوسرے مزائلوں میں لگے ایٹمی ہتھیاروں سے بچا جاسکتا ہے، اور ان سے نکلی ہوئی تابکاری ٹینکوں میں نہیں کرسکتی۔
Nasr Missile For India

ایک نصر میزائل فائر کر کے تین کلو میٹر کے ایریا میں تباہی پھیلائی جا سکتی ہے جبکہ چار نصر میزائل فائر کرکے بارہ کلومیٹر کے ایریا میں موجود دشمن کے فوجی دستوں فوجی گاڑیوں، ٹینکوں اور دیگر فوجی تنصیبات کو صفحہ ہستی سے مٹایا جا سکتا ہے، یہی وجہ ہے کہ بھارتی فوج انتہائی جدید ہتھیار ہوتے ہوئے بھی پاکستان پر حملہ نہیں کر پا رہی۔

پاکستان کے نئے اور جدید ترین نصر میزائل کی رینج تقریبا 70 کلومیٹر تک ہے، شروع میں اس میزائل کی رینج 60 کلومیٹر تک تھی، کہا جاتا ہے کہ اس میزائل کا نشانہ انتہائی زبردست ہے یعنی جس ہدف پر اسے داغ دیا جائے اسے سو فیصد تباہ کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ اس کے علاوہ پاکستان آرمی ڈرونز کو استعمال کرتے ہوئے بھی دشمن فوجی دستوں کی جاسوسی اور ان کی صحیح لوکیشن معلوم کرکے نصر میزائل کا استعمال کر سکتی ہے۔ مگر وہ کیسے؟

پہلے کی جنگوں میں ایک فوجی ٹیم وایرلس سمیت اگلے محاذ پر ہوتی تھی اور جب دشمن کی پیش قدمی واقع ہو تو یہ ٹیم توپ خانے کو وائرلیس پر پیغام پہنچاتی تھی اور اور دشمن کی صحیح جگہ بتاتی تھی، تاکہ توپوں سے صحیح مقام پر گولے داغے جائیں، مگر جدید دور کا تقاضہ ہے کہ اس کام کے لیے ڈرونز استعمال کیے جائیں جو بہتر طور پر ناصرف پیغام رسانی کا کام سرانجام دے سکتے ہیں بلکہ لائیو ویڈیو کوریج دیتے ہوئے دشمن کے علاقوں کا صحیح پتہ لگا سکتے ہیں۔
pakistani drone on india

یوں دشمن کی صحیح جگہ معلوم کرنے کے بعد آپ سمجھ سکتے ہیں کہ نصر مزائل تقریبا 70 کلومیٹر دور تک کتنی تباہی مچا سکتا ہے۔

یاد رہےاس رینج کے ساتھ ایسے ہتھیار امریکہ کے پاس بھی نہیں ہیں، امریکہ جیسا ملک بھی ان ہتھیاروں کو اپنی آرٹلری کے ذریعے دشمن پر پھینکتا ہے جس کی رینج پاکستان کے نصر میزائل سے بہت کم ہے۔
american

Share This

About yasir

Check Also

کیا واقعی جنرل ضیاء الحق امریکی آلہ کار تھے؟

پاکستان میں آج بھی ایسے لوگوں کی کمی نہیں جو جنرل ضیاء الحق کو امریکی …