Home / Pakistan Army / پاکستان کا بیٹا پاکستان اور اسلام کی جنگ لڑنے کو تیار

پاکستان کا بیٹا پاکستان اور اسلام کی جنگ لڑنے کو تیار

اگر مسلمان جڑ رہے ہیں تو اسکو غنیمت جانو ۔۔۔۔۔۔ !

دو دن پہلے اسلامی اتحادی افواج کا پہلا اہم اجلاس ہوا جس میں 41 ممالک نے شرکت کی۔

اس اجلاس میں پاکستان کے سابق سپاہ سالار راحیل شریف بطور ” کمانڈر اسلامی اتحاد ” شریک ہوئے۔ میزبان سعودی عرب کے کراؤن پرنس محمد بن سلمان کے بعد راحیل شریف نے اجلاس سے خطاب کیا۔ جس میں اس فوجی اتحاد کے اغراض و مقاصد کو واضح کیا۔

ان خطاب کے کچھ اہم نقاط یہ ہیں۔

الف ۔۔۔۔۔ یہ اتحاد دہشت گردی سے نمٹنے کے لیے بنایا گیا ہے جو اب تک کئی اسلامی ممالک کو ہڑپ کرچکی ہے۔

ب ۔۔۔۔۔ اس اتحاد کا نشانہ نہ کوئی مسلک ہے اور نہ ہی کوئی اسلامی ملک۔

ج ۔۔۔۔۔۔۔ داعش اور دہشت گردوں کو انڈیا سپورٹ کررہا ہے۔

د ۔۔۔۔۔ سی پیک پاک فوج کی دہشت گردوں کے خلاف کامیاب جنگ کا ثمر ہے جس سے دوسرے ممالک سیکھ سکتے ہیں۔

ایران، انڈیا اور سی پیک کے حوالے سے سپاہ سالار کے خطاب کو نہ صرف اجلاس میں شامل عرب ممالک نے غور سے سنا بلکہ زبانی طور پر اسکی تائید بھی کی ۔

پاکستان کا قابل فخر بیٹا اور جنگجو سپاہ سالار آج بھی ہماری جنگ لڑ رہا ہے۔

دہشت گردی اسلامی ممالک کا شیرازہ بکھیرنے کے لیے تخلیق کی گئی تھی لیکن اللہ نے ایسی صورت پیدا کی کہ اسی کے بطن سے ایک بہت لمبے عرصہ بعد پہلی بار اسلامی افواج کے اتحاد نے جنم لیا جس کی کمانڈ اللہ نے ایک عجمی کے ہاتھوں میں دی جو زیادہ بہتر شہسوار اور جنگجو ہے۔

اس اتحاد کا حصہ صرف عرب نہیں بلکہ بنگلہ دیش، ترکی، سوڈان، افغانستان، برونائی، چاڈ، ملاایشیاء، لیبیا، مراکو، نائجیریا، صومالیہ، مالدیپ اور یوگینڈا جیسے ممالک بھی ہیں۔

یہ اتحاد ابھی آپریشنل نہیں ہوا۔ لیکن ان شاءاللہ جلد ہوگا۔ عالم اسلام کے خلاف جاری دہشت گردی کی جنگ کو مد نظر رکھتے ہوئے یہ ہر مسلمان ملک کی ضرورت بن جائیگا۔

یاد رکھیں ۔۔ یہ اتحاد ہی ان ممالک کو مغرب کی دفاعی محتاجی سے نجات دلا سکتا ہے۔

اس پر طنز اور احمقانہ تبصرے کر کے اسکو کمزور کرنے کے بجائے اس کی بھرپور حمایت کرنی چاہئے۔

اس میں ایران کو شامل کرنے کی کوششیں جاری رکھنی چاہئیں۔ میں نے پہلے بھی عرض کی تھی کہ اس معاملے میں مسلکی اختلافات دور کرنے کے لیے راحیل شریف کی ہدایت پر مولانا فضل الرحمن کو خصوصی ٹاسک دیا گیا تھا۔ لیکن یہاں حالت یہ ہے کہ اس نے اپنے جلسے میں صرف شعیہ علماء کو شریک کیا تو یار لوگوں نے اسی پر اعتراض کردیا۔ جبکہ میرے خیال میں یہ واحد ڈھنگ کا کام کیا گیا تھا۔

مسلمانوں کو آپس میں جڑنے دو چاہے جیسے بھی ہو!

Share This

About yasir

Check Also

کیا واقعی جنرل ضیاء الحق امریکی آلہ کار تھے؟

پاکستان میں آج بھی ایسے لوگوں کی کمی نہیں جو جنرل ضیاء الحق کو امریکی …