Home / International / تیجس بھارت کا دفاع کرنے کے قابل نہیں – بھارتی فضائیہ

تیجس بھارت کا دفاع کرنے کے قابل نہیں – بھارتی فضائیہ

بھارتی فضائیہ کے مطابق بھارتی ساختہ لڑاکا طیارہ “Tejas ” ملکی دفاع کے قابل نہیں ہے اور نہ ہی ہم پلہ طیاروں کو ٹکر دے سکتا ہے۔

بھارتی فضائیہ کا کہنا ہے کہ ” Tejas” لڑاکا طیارہ دنیا کے باقی سنگل انجن لڑاکا طیاروں خاص طور پر “F-16″ اور ” Jas 39 Gripen” سے بہت پیچھے ہے جبکہ طیارے کی دیکھ بھال کا خرچہ بھی ان طیاروں سے زیادہ ہے۔
Tejas Rejected

ہال تیجس بھارت کا ایک ایسا پروگرام ہے جسے 1980ء میں شروع کیا گیا، اس پروگرام کا مقصد مستقبل میں بھارت کے پرانے لڑاکا طیاروں خاص طور پر”Mig 21″ کو ریٹائر کر کے ان کی جگہ” Tejas” لڑاکا طیاروں کو فضائیہ میں شامل کرنا تھا۔

اس کے علاوہ بھارت اپنی نیوی کے لیے بھی یہ طیارے بنانا چاہتا تھا مگر 35 سال سے بھی زیادہ عرصہ گزر جانے کے بعد صرف پانچ طیارے ہی بن پائے اور وہ بھی 4th جنریشن کے طیاروں سے بہت پیچھے ہیں یا مقابلہ نہیں کرسکتے۔   ہال تیجس کو نہ صرف بھارتی فضائیہ نے اڑانے سے انکار کردیا ہے بلکہ حال ہی میں بھارتی نیوی نے بھی اسے ناقابل استعمال قرار دے دیا تھا۔

اس کے علاوہ بھارت کو ان طیاروں کے لیے کوئی گاہک بھی نہیں مل سکا، گاہک نہ ملنے کی ایک بڑی وجہ یہی ہے کہ یہ طیارہ جس فضائیہ اور نیوی کے لئے بنایا گیا تھا وہی اسے اپنانے کے لیے تیار نہیں ہیں، ایسے میں کوئی ملک کیسے اسے خرید کر اپنی فضائیہ کے حوالے کر سکتا ہے۔
Tejas Aircraft is not Enough For India

اطلاعات کے مطابق بھارت عنقریب ” Arjun MK 1 ” جنگی ٹینک کے پروگرام کی طرح اس پروگرام کو بھی ختم کرسکتا ہے، جبکہ “Tejas MK2″ کی پروڈکشن بھی خطرے میں پڑ چکی ہے، اور دفاعی تجزیہ کاروں کے مطابق بھارت اپنی ٹیکنالوجی استعمال کرکے بھی”Tejas MK2” تیار نہیں کر پائے گا۔
یاد رھے کہ اس وقت بھارت ایک “5th Generation” لڑاکا طیارہ بھی بنانے میں لگا ہوا ہے جس کا نام ” Hal AMCA ” ہے اور بھارت اس طیارے کو چند سالوں میں منظر عام پر لانے کا ارادہ رکھتا ہے.

اس کے علاوہ بھارت کو اس وقت”Mig 21″ طیاروں کو ریٹائر کر کے ان کی جگہ نئے سنگل انجن لڑاکا طیاروں کو فضائیہ میں شامل کرنے کی سخت ضرورت ہے، کیونکہ “Mig 21” بھارتی لڑاکا طیارے تیزی سے ناکارہ ہو رہے ہیں جن کی وجہ سے انہیں “اڑتے تابوت” بھی کہا جاتا ہے, اصل میں ان طیاروں کی ریٹائرمنٹ کا وقت آن پہنچا ہے جب کہ جن لڑاکا طیاروں نے ان کی جگہ آج سے کئی سال پہلے لے لینی تھی وہ لڑاکا طیارے فضائیہ لینے کے لیے تیار ہی نہیں ہے۔

بھارت کسی مغربی ملک سے معاہدہ کرنا چاہتا ہے جس کے مطابق وہ سنگل انجن اور کم خرچ “4th Generation” طیارے دوسرے ملک سے مل کر ملکی سطح پر پر بنائے گا، بھارت امریکی ساختہ”F-16″ کے علاوہ سویڈن کے “Jas 39 Gripen” لڑاکا طیاروں کو “Make in India” پروگرام کے تحت ملکی سطح پر بنانے کے بارے میں سوچ رہا ہے۔ یہ دونوں تیرے دنیا کے بہترین “4th Generation” لڑاکا طیارے تصور کیے جاتے ہیں۔ مگر فلحال اس بات کا اندازہ نہیں لگایا جاسکتا کہ ان دونوں طیاروں میں سے کونسا طیارہ بھارت ملکی سطح پر تیار کرے گا۔
India Looking For Single Engine Fighter Jet

بھارت اپنے بنائے ہوئے “Tejas” طیاروں کو اس وقت بھی پاکستان کے بنائے ہوئے “JF-17 Thunder” لڑاکا طیاروں سے بہتر ہونے کا دعویٰ کرتا ہے, مگر پاکستان نے اپنے “JF-17 Thunder” کو اپگریڈ کر کے “F-16” جیسا خطرناک اور جدید کر چکا ہے، اس وقت بلا ک 1 طیاروں کو بلاک 2 پر تیزی سے اپگریڈ کیا جا رہا ہے جس کے بعد ان طیاروں میں زیادہ ہتھیار لے جانے کی صلاحیت بڑھ جائے گی۔

اس کے علاوہ جہاں “Tejas” کو اپنی فضائیہ نے ٹھکرادیا ہے وہاں پاکستانی ساختہ”JF-17 Thunder” لڑاکا طیارے کے خریداروں میں اضافہ ہونا شروع ہوگیا ہے۔پاکستان ان طیاروں کو نہ صرف نائجیریا بلکہ بھارت کے دیرینہ دوست میانمر کو بھی فروخت کر رہا ہے۔ پاکستان کے اس پروجیکٹ کی کامیابی کا اندازہ اس بات سے بھی لگایا جاسکتا ہے کہ اس طیارے کے اب تک چار ویرینٹس بن چکے ہیں، جن میں سے تین منظر عام پر آچکے ہیں جبکہ چوتھا یعنی بلاک 3 جلد منظر عام پر آ جائے گا۔

پاکستان کا دعویٰ ہے کہ بلاک3 اب تک کا سب سے جدید ترین اور “4.5 Generation” کا لڑاکا طیارہ ہوگا جو کہ “F-16” طیاروں کو بھی پیچھے چھوڑ دے گا, اس کے علاوہ اس طیارے کو اس قابل بنایا جائے گا کہ اسے نئی جنریشن کے میزائلوں سے بھی لیس کیا جاسکے یہ طیارہ بھارت کے “SU 30mki” سے بھی زیادہ جدید ہوگا۔
JF-17B For Future

اس کے علاوہ پاک فضائیہ نے “JF-17B” کے ائیر فریم کو اس طرح ڈیزائن کیا ہے کہ یہ طیارہ ناصرف پائلٹس کو تربیت دینے کے لئے استعمال ہو سکتا ہے بلکہ ایڈوانسڈ کانفیگریشن کرنے کے بعد اسے صف اول کا لڑاکا طیارہ بھی بنایا جا سکتا ہے۔

Share This

About yasir

Check Also

نریندر مودی’ ٹرمپ اور مسلمان

ایک طرف امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے امریکہ میں مسلمانوں کی آمد کو بند اور …