Home / International / ایف سولہ طیاروں کی صنعت سعودی عرب میں ہو گی

ایف سولہ طیاروں کی صنعت سعودی عرب میں ہو گی

طیارے بنانے والی بین الاقوامی معروف “بوئنگ” کمپنی کے سربراہ ماریک ایلن کا کہنا ہے F-16 لڑاکا طیاروں کے پَروں اور فوجی طیاروں کے دیگر پرزہ جات کی تیاری سعودی عرب کے اندر عمل میں آئے گی۔
ریاض میں بین الاقوامی سرمایہ کاری کانفرنس کے موقع پر العربیہ نیوز چینل سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ “مملکت کے ویژن 2030 پروگرام کے حوالے سے حکومت کی جانب سے ترقیاتی منصوبوں کی لہر کو دیکھنے کے لیے ہم بہت پُرجوش ہیں”۔
F 16 Parts in Saudi Arabia

ایلن کے مطابق یہ بات واضح ہے کہ سعودی حکومت تفریحی اور سیاحت و سفر کے سیکٹروں میں سرمایہ کاری کے لیے حقیقی طور پر کاربند ہے۔ ویژن 2030 کے تحت حج سیزن میں زائرین کی تعداد کو 80 لاکھ سے 3 کروڑ تک پہنچانے کا ہدف ہے۔ اس کے لیے سعودی عرب کے ہوابازی کے سیکٹر میں طلب میں اضافہ ہو گا۔ ہمارے نزدیک مشرق وسطی میں آئندہ 20 برسوں کے دوران 3350 طیاروں کی ضرورت ہو گی۔ اس ضمن میں طیاروں کی تیاری کے لیے 730 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کی ضرورت ہو گی۔ لہذا اس میں کوئی شک نہیں کہ یہ تمام پیش رفت ترقی کی نئی راہیں کھولے گی۔

ایلن کا مزید کہنا تھا کہ اس سلسلے میں اچھی خبر یہ ہے کہ عالمی معیشت بہت مضبوط ہے جہاں ہم مسلسل نُمو دیکھ رہے ہیں۔ کسی مخصوص علاقے کا تعین نہیں کر سکتے تاہم سعودی عرب نے سرمایہ کاری کے حوالے سے وسیع منصوبہ بندی کی ہے اور اس کی صنعتی پالیسی بھی واضح ہے۔ اس سلسلے میں سیاحت ، سفر اور حج سیزن پر توجہ مرکوز ہے۔

سعودی عرب میں F-16 طیاروں کے حوالے سے ایلن نے بتایا کہ “ایف سولہ طیاروں کے پَر اور دیگر پرزہ جات مملکت میں تیار کیے جائیں گے۔ حقیقی چیلنج صلاحیت کا پیدا کرنا نہیں بلکہ حقیقی چیلنج صلاحیتوں اور قدرت کو وسعت دینا ہے.. اور ویژن 2030 کے ضمن میں ہمیں اس ہدف میں کامیابی کا یقین ہے”

About yasir

Check Also

ترکی کا امریکہ کو بھرپور جواب – ترک معاشی جنگ اور آئی فون

ترکی میں لاکھوں لوگ آئی فون استعمال کرتے ہیں. آئی فون بڑی تعداد میں امریکہ …