Home / News / بھارت نے روس کے ساتھ جدید ترین سٹیلتھ جنگی طیارے کا منصوبہ معطل کر دیا

بھارت نے روس کے ساتھ جدید ترین سٹیلتھ جنگی طیارے کا منصوبہ معطل کر دیا

بھارت نے روس کے ساتھ سٹیلتھ جنگی طیارے کا منصوبہ معطل کر دیا،تفصیلات کے مطابق ایک ڈیفنس نیوز ایجنسی نے خبر دی ہے کہ بھارت روس کے ساتھ ففتھ جنریشن کے جنگی جہازوں کے مشترکہ منصوبے پر کام کر رہا ہے یہ لڑکا طیارے ریڈار پر نظر نہ آنے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔ غیر ملکی نیوز ایجنسی کے مطابق بھارتی حکام روس کے اس مشترکہ منصوبے سے خوش نہیں ہیں۔
India 5th Gen Deal

اس جدید لڑاکا طیارے کو ٹی 50 کا نام دیا گیا ہے،خبروں کے مطابق بھارت دفاعی حکام اس طیارے کی بعض چیزوں سے مطمن نہیں ہیں اس لیے وہ اس مشترکہ معاہدے سے باہر آنا چاہتے ہیں۔

اس بات سے یہ بھی ثابت ہوتا ہے نئی دہلی اپنی ترجیحات میں تبدیلی کر رہی ہے ہم یہ کہ سکتے ہیں کہ بھارت اور امریکا دفاعی تعاون میں ایک دوسرے کے قریب آ رہے ہیں۔ مگر فلحال یہ امکان بھی نہیں ہے کہ بھارت کو امریکہ سے سٹیلتھ لڑاکا طیارے مل سکیں۔

مشترکہ طیاروں کی تیاری کا یہ معاہدہ بھارت روس کے درمیان گزشتہ دس سال سے موجود ہے اس کا بنیادی مقصد روس کے جدید ترین طیارے کو بھارت کی ضرورت کے علاقائی ضروریات کے مطابق بنانا شامل تھا۔

یاد رہے روس کے جدید ترین لڑاکا طیارے ایس یو 30 کو بعض حالات میں انجن میں خرابی کا سامنا کرنا پڑتا ہے ،بھارت میں روسی طیاروں کو اُڑتے ہوئے تابوتوں کا نام بھی دیا جا چکا ہے,بھارت نے فرانس سے رافیل طیاروں کا بھی سودا کر رکھا ہے مگر یہ طیارے ریڈاروں کو دھوکہ نہیں دے سکتے۔ بھارت ملکی سطح پر ففتھ جنریشن کا طیارہ بنا رہا ہے جسے بھارت آئیندہ 10 سالوں میں فضائیہ میں شامل کرنے کا ارادہ رکھتا ہے۔

یاد رہے بھارت طیارہ سازی میں بہت پیچھے ہے اور اس بات کا ثبوت یہ ہے کہ بھارت نے تیجس لڑاکا طیارے کو بنانے میں 35 سال کا عرصہ لگا دیا ہے۔ جو کہ تھرڈ جنریشن طیارہ ہے۔ بھارت کو ففتھ جنریشن کے طیارے بنانے میں اچھا خاصہ وقت درکار ہے۔ 

Share This

About yasir

Check Also

جدہ میں امریکی قونصل خانے کے قریب حملہ کرنے والا پاکستانی نہیں بھارتی تھا

حکومت کے اہلکاروں نے کہا ہے کہ 2016 میں سعودی عرب کے جدہ میں امریکی …