Home / China / چائنہ پاکستان کا ٹریڈ پارٹنر بن چکا ،دونوں ملکوں کی دوستی مثالی

چائنہ پاکستان کا ٹریڈ پارٹنر بن چکا ،دونوں ملکوں کی دوستی مثالی

چائنہ اور پاکستان کی دوستی مثالی ہے جو سمندروں سے گہری پہاڑوں سے بلنداور شہد سے زیادہ میٹھی ہے، وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ پاکستان اور چائنہ کی دوستی مضبوط ہوئی ہے جو کہ ایک قابل ستائش عمل ہے ، چائنہ کے عوام اس لازوال دوستی کو آنے والی نسلوں تک لے جائے گی، پاکستانیوں کے چہر وں پر ملتے رنگ خوشی ومسرت دیکھ کر مجھے بھی خوشی اور اطمینان ہوتا ہے، چائنہ پاکستان کا ٹریڈپارٹنر بن چکا ہے اور پچھلے تین سالوں میں چائنہ نے پاکستان میں سب سے زیادہ انو یسٹمنٹ کی ہے۔

ان خیالات کا اظہار چائنہ کے پاکستان میں سفیر سن ویڈانگ نے لاہور پی سی ہوٹل میں پاکستان کے سینئرکالم نگاروں،تجزیہ کاروں، صحافیوں مجیب الرحمن شامی، غریدہ فاروقی، سلیم بخاری، میاں سیف الرحمن، عمر شامی ، سلمان غنی، افضال ریحان، حفیظ اللہ نیازی، عثمان شامی , شعیب بن عزیز و دیگر سے ایک خصوصی نشت میں اپنے چار سالہ بطور سفیر تعیناتی کے تجربوں کے حوالے سے بات چیت کر تے ہوئے کیا۔اس نشت کا اہتمام وزیراعظم پاکستان کے سپیشل انوائے فار سی پیک ظفر احمد نے کیا تھا۔چائنہ کے پاکستان میں سفیر سن ویڈانگ نے کہا کہ پاکستان کے تقریباً بیس ہزار طالب علم چائنہ میں تعلیم حاصل کر رہے ہیں جبکہ 5ہزار طالب علموں کو چائنہ نے سکالر شپ دیا ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ انہوں نے وزیر اعلیٰ پنجاب میاں محمد شہباز شریف کو اپنے چار سالہ سفیر کے دور میں بہت زیادہ محنتی پایا جنہوں نے صوبہ کی ترقی اور عوام الناس کی فلاح و بہبود کے لیے بہت زیادہ کام کیا ہے اور اپنے چائنہ کے خصوصی دوروں پر انہوں نے عوام الناس کے فلاح کے پروجیکٹس پر بات چیت کی۔

سی پیک منصوبہ کے حوالے سے بات کرتے ہوئے سن ویڈانگ نے کہا کہ اس سے پاکستان کی معشیت کو زبردست فائدہ ہو گا اور آج یہ منصوبہ ابتدائی حصّہ سے نکل کر عملدرآمد کے فیز میں داخل ہو چکا ہے۔انہوں نے بتایا کہ چائنہ نے پاکستان میں مختلف شعبوں میں19پروجیکٹس شروع کیے ہوئے ہیں اور18.5بلین ڈالر کی انویسٹمنٹ کی ہوئی ہے، سی پیک منصوبہ کے علاوہ توانائی، انفراسٹرکچر، گوادر پورٹ اور انڈسٹریل زون میں کام کیا جارہا ہے، توانائی کے شعبہ میں پاکستان کے نیشنل گریڈ میں تقریباً2ہزار میگاواٹ بجلی شامل کی گئی ہیں، انفراسٹرکچر کے حوالے سے قراقرم ہائی وے فیز ٹو اور پشاور تا کراچی ایکسپریس وے شامل ہے، گوادر پورٹ آپریشنل ہے۔

پاکستان کی معاشی صورتحال پر بات چیت کرتے ہوئے چائنی سفیر نے کہا کہ معاشی گروتھ3.6سے 5.3تک ہوئی ہے جن کو معاشی ماہرین نے تسلی بخش اور پاکستان کے لیے ایک کامیابی قرار دیا ہے، پاکستان کی سکیورٹی صورتحال کو بھی چائنی سفیر نے تسلی بخش قرار دیا اور کہا کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان نے قربانیاں دی ہیں اور عالمی سطح پر ان کاوشوں اور قربانیوں کو تسلیم کرنا چاہیے۔ چائنی سفیر نے پاکستان کی جغرافیائی لوکیشن کو نہایت اہمیت کا حامل قرار دیا اور کہا کہ پاکستان میں مشرق اور مغرب اور شمال اور جنوب کے درمیان ایک لنک ہے اور خطہ میں پُل کی حیثیت رکھتاہے اور چائنہ ہمیشہ پاکستان کے ساتھ برابری کی سطح پر کام کرنا چاہتا ہے ۔سینئر صحافیوں اور کالم نگاروں نے چائنہ اور پاکستان کی لازوال دوستی کو سراہا اور چین کے 68 ویں یوم آزادی کے حوالے سے چائنہ کے سفیر سن ویڈانگ کو مبارک باد پیش کی۔

Share This

About yasir

Check Also

کن کن محاذوں پر ملک کا دفاع ضروری ہو چکا ہے

جہاں پاکستان کے دفاع کی بات آتی ہے تو یہ دفاع صرف اور صرف میدان …