Russia concerned over emergence of Turkish combat drones in Ukraine

روس کی ترکی کو وارننگ

ترکی اور یوکرین کے درمیان 2019 میں بےرکتر ڈرونز کا معاہدہ ہوا تھا۔ اور اس معاہدے کے تحت ان ڈرونز کے چند یونٹس بھی یوکرین کے حوالے کئے جا چکے ہیں۔ جبکہ 2020 میں مزید 48 ڈرونز کیلئے معاہدہ کیا گیا تھا۔

بے رکتر ڈرون کو پینٹسر ائیر ڈیفنس میزائل سسٹم کا زبردست دشمن سمجھا جاتا ہے۔ آذر بائیجان اور آرمینیا کے درمیان ہونے والی جنگ میں اس ڈرون نے آرمینا کے پاس موجود جدید روسی ساختہ اسلحے کے خلاف تباہی مچا دی تھی۔ اب یہ ڈرون یوکرین کے پاس بھی موجود ہیں اور اگر روس اور یوکرین کی فورسز کے درمیان جھڑپیں شروع ہوئیں تو یہ ڈرونز براہ راست روس کے خلاف استعمال ہو سکتے ہیں۔ 

pantsir and Bayraktar TB2 Drone

 

جسکی وجہ سے روس نے ترکی کو مخاطب کرکے کہا ہے کہ وہ مزید ایسے ڈرونز یوکرین کو فراہم کرنے سے گریز کرے۔  یوکرین کی ائیر فورس کے علاوہ نیوی بھی بے رکتر ڈرونز استعمال کرنے کا ارادہ رکھتی ہے۔  اس ڈرون نے حال ہی میں ترکش نیوی کی ایک ڈرل میں لمبے فاصلے تک مار کرکے یہ ثابت کیا ہے کہ بے رکتر نا صرف گراونڈ اٹیک کیلئے ایک زبردست ڈرون ہے بلکہ نیول وارفئیر میں بھی بہترین کارکردگی دکھا سکتا ہے

2 thoughts on “روس کی ترکی کو وارننگ”

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *