Home / Pakistan Navy / پاکستان نیوی ایف-22پی کلاس فریگیٹ

پاکستان نیوی ایف-22پی کلاس فریگیٹ

پاکستان نیوی ایف-22پی کلاس فریگیٹ:
پاکستان کا سب سے جدید اور دنیا کے ٹاپ 20 خطرناک فریگیٹس میں شمار ہونے والا یہ فریگیٹ پاکستان میں ذولفقار( حضرت محمد صل اللہ علیہ و آلہ وسلم کی تلوار کا نام) کلاس فریگیٹ کے نام سے جانا جاتا ہے.

یاد رہے یہ فریگیٹ 80، کی دهائی کے ایک فریگیٹ کے طرز پر بنایا گیا ہے لیکن اسکی جدت کسی بهی پرانے فریگیٹ سے زیادہ ہے.
پاکستان نیوی کے پاس کئی طرح کے فرگیٹس موجود ہیں۔ اس کلاس میں ٹوٹل 4 ذولفقار کلاس فریگیٹس موجود ہیں. جبکہ پاکستان اب اس سے بهی زیادہ جدید فریگیٹس کے لیے آرڈر دے چکا ہے.
Pakistan Type 54a Frigate

ان چاروں میں سے پہلے سے تین فریگیٹ چین کی شپ یارڈ پر بنائے گئے اور 2009 سے لیکر 2012 تک پاکستان کو فراہم کر دیے گئے.جبکہ چوتها ذولفقار فریگیٹ پاکستان نے ٹیکنالوجی ٹرانسفر کی بنیاد پر کراچی شپ یارڈ میں بنایا.

F 22p frigate pakistan

پاکستان کا یہ فریگیٹ ہر طرح کے ریڈاروں سے لیس ہے. ان ریڈاروں میں سے “SR-60” فضا اور زمین پر ٹارگٹ کی کهوج لگانے والا ریڈار ،سرویلنس ریڈار اور سونار وغیرہ شامل ہیں. پاکستان نیوی کا یہ فریگیٹ اس کے علاوہ بهی کئی جدید ہتهیاروں سے لیس ہے۔
SR-60

یہ فریگیٹ”76.2mm” کی ایک “AK-176m” مین گن سے لیس ہے. یہ مین گن کسی بهی ایریل ٹارگٹ ،فاسٹ اٹیک بوٹ، یا کم بلندی پر پرواز کرنے والے اینٹی شپ میزائل کو 16 کلومیٹر کے فاصلے سے مار گرا سکتی ہے. اس گن کے پاس 150 راونڈ ایکٹیو حالت میں موجود ہوتے ہیں اور یہ ریڈار سے منسلق ہوتی ہے. جیسے ہی ریڈار ٹارگٹ کو دیکھ لیتا ہے , یہ گن اس ٹارگٹ پر فائر کھول دیتی ہے۔
76 mm main gun

نزدیکی ائیرڈفینس کے لیے اس فریگیٹ پر چین کی بنی ہوئی جدید “Type 730 CIWS” نام کی سیون بیرل گیٹلنگ گن لگی ہوتی ہے. یہ ایک ہیوی بیرل کی منی گن ہے. یہ مشین گن ایک منٹ میں 5800 تک گولیاں داغ سکتی ہے.دراصل اس گن کو روس نے امریکی سپر سونک میزائلوں سے بچنے کے لیے بنایا تها جس سے اس گن کی اہمیت واضع ہوتی ہے. یہ گن کسی بهی سپر سونک میزائل، جہاز یہاں تک کے چهوٹے سے ڈرون کو بهی 3 کلومیٹر کے فاصلے سے مارگراتی ہے. ریڈار سے منسلق یہ آٹومیٹک گن فائر اینڈ فورگٹ کے عمل پر کام کرتی ہے.
Type 730 CIWS

جہاز کی اگلی جانب “FM-90N” سام سسٹم نصب ہوتا ہے.یہ اینٹی میزائل اور اینٹی ائیرکرافٹ میزائل سسٹم کسی بهی میزائل یا جہاز کو 15 کلومیٹر دور سے ہی تباہ کرنے کی صلاحیت رکهتا ہے. ہر ذولفقار کلاس فریگیٹ پر اس سسٹم کے کم ازکم 8 سیل/میزائل نصب ہوتے ہیں.
FM-90N

کسی بهی جنگی جہاز کو تباہ کرنے کے لیے ہر ذولفقار کلاس فریگیٹ کے پاس 180 سے 200 کلومیٹر رینج تک سمندر سے سمندر میں مار کرنے والے 8 “C-802” اینٹی شپ کروز میزائل موجود ہوتے ہیں.
Pakistan C-802

اسکے علاوہ اس کلاس کے ہر فریگیٹ پر 6 “ET-52c” تارپیڈو لانچرز موجود ہوتے ہیں. یہ تارپیڈو سونار کی مدد سے آبدوز اور بحری جہاز کو تباہ کرنے کے کام آتے ہیں. اسکے علاوہ دشمن کی آبدوز کو تباہ کرنے کے لیے اس فریگیٹ میں 12 جدید “RDC-32” اینٹی سبمیرائن راکٹ لانچرز بهی لگے ہوتے ہیں.
ET-52c

علاوہ ازیں کروٹیل سام سسٹم بهی اس فرگیٹ میں موجود ہوتے ہیں. پاکستان کا ہر ذولفقار کلاس فریگیٹ تقریباً 404 فٹ لمبا ہوتا ہے.اس میں کپتان سمیت 170 عملے کے ارکان ہوتے ہیں جبکہ یہ جہاز 54 کلومیٹر فی گهنٹہ کی رفتار سے دوڑ سکتا ہے.

اس فریگیٹ کی رینج 7400 کلومیٹر تک ہے. یعنی کہ یہ فریگیٹ دشمن کی سمندری حدود کے اندر تک جا کر دشمن کو تباہ کرنے کی صلاحیت رکهتا ہے. ان تمام ہتهیاروں کے علاوہ یہ جنگی جہاز اینٹی سبمیرائن ورفیر کے حامل ہیلی کاپٹر”Z-9″ کو بهی اٹها سکتا ہے.
z 9 Pakistan helicopter

چھ ستمبر 2014 کو القاعدہ نے ہائی جیک کرنے کے لیے اس طرح کے ایک فریگیٹ پر حملہ کیا لیکن پاکستان نیوی کی کمانڈوز نے بروقت یہ منصوبہ ناکام بنا دیا. اس حملے میں 4 نیوی اہلکار شہید ہوئے جبکہ 6 دہشت گرد مارے گئے.
pakistan navy commandos

Facebook Comments
Share This

About yasir

Check Also

پاک بحریہ خود کفالت کی طرف بڑھ رہی ہے

بحری قوت بڑھاکر اپنے ساحلوں کی حفاظت کرنے والے ملکوں کو سمندروں پر بھی اجارہ …

error: Content is protected !!