Home / Pakistan Army / آئی ایس آئی اور عالمی منصوبہ سازوں کے درمیان جنگ

آئی ایس آئی اور عالمی منصوبہ سازوں کے درمیان جنگ

آئی ایس آئی اور عالمی منصوبہ سازوں کے درمیان جنگ”

آپ کو پتہ ہے مغرب اور امریکہ میں آئی ایس آئی کو بدمعاش ایجنسی کیوں کہا جاتا ہے؟ اس لیے کہ یہ کسی کے قابو میں نہیں آتی۔

بڑی طاقتوں کی ایک عجیب خودپسندانہ نفسیات ہوتی ہے وہ ترقی پذیر ممالک کو یا تو مکمل اپنا باجگزار بنا کے رکھنا چاہتی ہیں یا کسی نہ کسی انداز سے ان کو اپنا محتاج بنا کے رکھنا چاہتی ہیں۔ تا کہ بوقتِ ضرورت ان کو بلیک میل کر کے یا طاقت کے زریعے اپنے مقاصد کےلیے استعمال کیا جا سکے۔ سفید چمڑی والے امریکی جو پینٹا گون اور واشنگٹن میں بیٹھ کر دنیا کے امور کو دیکھتے ہیں اپنی ایڑی چوٹی کا زور لگا چکے ہیں کہ پاکستان کو اپنی مرضی کے مطابق استعمال کریں۔
America Against Pakistan

اس مقصد کی تکمیل میں آئی ایس آئی اور پاکستان آرمی وہ سب سے بڑی رکاوٹ ہیں جو ان کے ناپاک مقاصد کو تکمیل سے روکے ہوئے ہیں۔آئی ایس آئی پر عالمی طاقتوں کے غصے کی وجہ دراصل ان کی بے بسی ہے۔ وہ بے بسی جو آئی ایس آئی پہ قابو نہ پا سکنے کی صورت میں ان کو ہمیشہ سے لاحق ہوتی ہے۔

مثال کے طور پر روس افغان جنگ میں امریکہ پاکستان کو افغانستان کے خلاف استعمال کرنا چاہتا تھا مگر جواب میں پاکستان نے امریکہ کو ہی روس کے خلاف استعمال کر لیا۔

روس افغان جنگ کی آڑ میں آئی ایس آئی نے پاکستان کا جوہری پروگرام مکمل کیا جس پہ امریکہ آج تک سر پیٹتا ہے۔امریکہ افغانستان کے جنگجو سرداروں سے رابطے بڑھا کر مستقبل میں انہیں اپنے لیے استعمال کرنا چاہتا تھا آئی ایس آئی نے یہ بھی ناکام بنا دیا۔ اپنے زمینی حقائق کے مطابق آئی ایس آئی نے امریکہ کی سیاسی مداخلت کو پاکستان میں کبھی اعلانیہ اور کبھی خفیہ طور پر روکا۔

پاکستان کے مخالفین کےلیے نظریہ پاکستان اس ملک کا بہت بڑا مسئلہ ہے کیوں کہ یہ نظریہ پاکستان ہی ہے جس کی وجہ سے پاکستانی نہ صرف ھندوستان بلکہ تمام غیر مسلم اقوام سے جدا ہو کر اپنی الگ انفرادی شناخت بناتے ہیں۔ یہ انفرادی شناخت ایک طرف گلوبل ازم کے خواب دیکھنے والوں کی آنکھوں میں کھٹکتی ہے۔ دوسری طرف بھارت سے ہمارے تعلقات کےلیے ایک حد مقرر کرتی ہے۔
pakistan india

اس نظریہ کو مسخ کرنے کےلیے عالمی سطح پر کی گئی کوششوں کو ہمیشہ سے آئی ایس آئی نے ناکام بنایا۔ آج تک یہ کوشش ان کی طرف سے جاری ہے کہ پاکستانی کسی طرح نظریہ پاکستان س دستبردار ہو جائیں لیکن کامیابی نہیں ہوئی۔ ہم میں سے ہر کوئی جانتا ہے ہمارے سیاستدانوں اور حکمرانوں کو نظریہ پاکستان سے اتنی بھی دلچسپی نہیں جتنی سری پائے سے ہوتی ہے۔ اس کے باوجود یہ نظریہ آج تک زندہ ہے۔ کیسے؟ اس سوال کی جڑوں میں آپ کو پھر آئی ایس آئی دکھائی دے گی۔

ترقی پذیر ملکوں کو عالمی سطح پر بلیک میل کرنے کےلیے یا دباؤ میں رکھنے کےلیے سفارتی اور سیاسی محاز ایک بہت بڑی حقیقت ہوتا ہے۔ بین الاقوامی سطح پر امریکہ کی طرف سے پاکستان کے متعلق جو بڑے پراپگینڈے کیے گئے ان میں سے ایک یہ تھا کہ پاکستان دھشت گردوں کو سپانسر کرتا ہے۔

ہم پاکستان کے رہنے والے جانتے ہیں کہ ایسا نہیں لیکن دنیا بھر میں امریکہ نے پاکستان کو دھشت گردوں کا ابو جی ثابت کروانے کی پوری کوشش کی اور کچھ عرصے کےلیے کامیاب بھی ہوا۔ امریکہ نے دنیا بھر کی اقوام کو یہ باور کروایا کہ پاکستان افغانستان کے اسلام پسند دھشت گردوں کو مدد دے رہا ہے۔ آئی ایس آئی نے صرف ایک حرکت کی۔

عالمی سطح پر اس تاثر کو عام کیا کہ سفید چمڑے والے جن کو اسلام پسند دھشت گرد کہہ رہے ہیں وہ اپنی آزادی کےلیے لڑ رہے ہیں۔ آئی ایس آئی نے دنیا بھر کو دھشت گردی، انتہا پسندی اور جنگِ آزادی کے درمیان واضح فرق بنا کے دیے۔ بالاخر دنیا کو تسلیم کرنا پڑا کہ نہیں بالکل ویسا نہیں ہے جیسا امریکہ بتا رہا ہے کچھ پاکستان کی بھی سنو۔
Pakistan Military Chief

یہی چال بھارت نے کشمیر کے حریت پسند جنگجوؤں کے متعلق چلی اور کہا کہ پاکستان جیشِ محمد اور لشکرِ طیبہ کے دھشت گردوں کی مدد کرتا ہے۔ یہ آئی ایس آئی ہی تھی جس نے بتایا کشمیر میں لڑنے والے بھارت کی بربریت کی وجہ سے کھڑے ہوئے ہیں آئی ایس آئی کی وجہ سے نہیں۔ یہاں پھر عالمی طاقتوں کو منہ کی کھانی پڑی۔
kashmir

پاکستان کے نیوکلیئر پروگرام کے معلق عالمی سطح پر امریکہ اور یورپی یونین کے ممالک نے اتنا شور مچایا کہ گماں ہونے لگا کہ دنیا ایک چلتے ہوئے ٹائم بم کے اوپر رکھی ہے جو کسی بھی وقت پھٹے گا اور دنیا تباہ ہو جائے گی۔ کہا گیا کہ پاکستان کے ایٹمی ہتھیار عنقریب دھشت گردوں کے قبضے میں چلے جائیں گے اور چٹی چمڑی والی اقوام صفحہ ہستی سے مٹ جائیں گی۔ واضح رہے کہ عراق کے نا ہونے والے جوہری ہتھیاروں کے خلاف امریکہ نے اتنی کامیابی سے پراپگینڈہ کیا کہ الثمود میزائل تلف کروائے مگر پھر بھی عراق کی اینٹ سے اینٹ بجا دی۔

مگر یہ عراق نہیں پاکستان تھا اور یہاں عراقی فوج کے بجائے پاکستانی فوج اور آئی ایس آئی کھڑی تھی۔ ہمارے سائنسدانوں کی انتھک محنت اور آئی ایس آئی کی مربوط پالیسیوں کی بدولت بالاخر دنیا بھر میں یہ واضح ہو گیا کہ پاکستان کا ایٹمی پروگرام دنیا بھر کے محفوظ ترین پروگرامز میں ایک ہے۔
Pakistan Rocket System

یہ چند حربے تھے جو پاکستان کو دباؤ میں لانے کےلیے امریکہ نے اختیار کیے مگر منہ کی کھائی۔ اور جب منہ کی کھائی تو امریکہ سمیت ہمارے ہر دشمن ملک پر واضح ہوا کہ پاکستان کا اصل مسئلہ نظریہ پاکستان، ایٹم بم، کرپشن یا دیگر چیزیں نہیں ہیں۔ بلکہ آئی ایس آئی پاکستان کا سب سے بڑا مسئلہ ہے۔

کیوں کہ یہ ایک ایجنسی ہے جو ہمارے ہر ارادے کو خاک میں ملا دیتی ہے۔لہٰذاپاکستان کو تب تک کوئی بڑا نقصان نہیں پہنچایا جا سکتا جب تک آئی ایس آئی موجود ہے۔ آپ نے سوچا ہو گا کہ میں نے باقی اداروں کا نام لیے بغیر سارا کریڈٹ آئی ایس آئی کی گود میں ڈال دیا تو پاکستان کے باقی مایہ ناز ادارے کہاں گئے؟ ہمیں ہر ادارے کی کارگردگی پر فخر ہے مقصد کسی کی کارگردگی کو گھٹانا بڑھانا نہیں ہے۔

لیکن آپ خود بھی گواہ ہوں گے کہ عالمی سطح پر کبھی پاکستان کے کسی ادارے پر تنقید نہیں ہوتی واحد پاک آرمی ہے اور آئی ایس آئی ہے جس پر دل کھول کے امریکہ اور دیگر ممالک جھاگ اڑاتے ہیں۔ یہ اس بات کا ثبوت ہے کہ آئی ایس آئی کے کردار سے امریکہ اور باقیوں کو خاص تکلیف ہے۔

تو دوستوں یہ ایک جنگ ہے جو ابھی جاری ہے پاکستان کے تمام دشمنوں اور آئی ایس آئی کے درمیان۔ یاد رکھیے گا آئی ایس آئی پاکستان کے دفاع کی پہلی اور آخری لائن ہے۔ خدا نہ خواستہ اگر آئی ایس آئی کو درمیان سے ہٹا دیا جائے تو نا آپ کا ایٹم بم محفوظ ہے، نا آپ کا نظریہ محفوظ رہتا ہے اور نا ہی آپ کا جغرافیہ اور سرحدی وجود سلامت رہتا ہے۔

آئی ایس آئی پاکستان کے دشمنوں کی جھنجھلاہٹ، گبھراہٹ اور ندامت کی علامت ہے۔ پاکستان کے خلاف حیلے بہانے کر کے نقصان دینے والے عناصر جب اپنے مقاصد میں ناکام ہوئے تو رخ پاکستان سے ہٹا کر آئی ایس آئی کی طرف موڑ لیا۔ پاکستان کے زہین ترین دماغوں اور عالمی منصوبہ سازوں کے درمیان ایک جنگ جو ابھی جاری ہے۔آئی ایس آئی زندہ باد.
Pakistan secret

Facebook Comments
Share This

About yasir

Check Also

جنرل اسد درانی کا اصل چہرہ : زید حامد

جنرل درانی کی کتاب پر مجھے کوئی تجزیہ کرنے کی ضرورت اس لیے نہیں ہے …

error: Content is protected !!