Home / Pakistan Air Force / پاک فضائیہ کے پاس موجود لانگ رینج اینٹی ریڈی ایشن ( اینٹی ریڈار) میزائل

پاک فضائیہ کے پاس موجود لانگ رینج اینٹی ریڈی ایشن ( اینٹی ریڈار) میزائل

پاک فضائیہ کے طیاروں اور پاکستان کے میزائلوں کو ناکارہ بنانے کے لئے بھارت نے کئی جدید ائیر ڈیفنس میزائل سسٹم اور زیادہ فاصلے تک دیکھنے والے ریڈار خریدے، بھارت کے دفاعی نظام کو دیکھتے ہوئے پاکستان ہمیشہ کم لاگت میں بھارتی ہتھیاروں کا توڑ نکال لیتا ہے، بھارت کے ریڈار سسٹمز کو دیکھتے ہوئے پاکستان نے اپنی فضائیہ کو تین سے چار قسم کے ایسے میزائل فراہم کیے جو کہ کسی بھی ریڈار کو تباہ کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں، ان خاص میزائلوں کو اینٹی ریڈی ایشن میزائل کہا جاتا ہے.
pakistan anti radar missiles

اینٹی ریڈی ایشن میزائل ریڈار کی ریڈی ایشنز کا پیچھا کرتے ہوئے ریڈار تک پہنچ جاتا ہے اور پلک جھپکتے ہی ریڈار کے پرخچے اڑا دیتا ہے، اب آپ کو بتانا چاہوں گا کہ پاکستان کی فضائیہ کے پاس کن کن ممالک کے اور کتنے فاصلے تک مار کرنے والے اینٹی ریڈی ایشن میزائل موجود ہیں۔

پاکستان کی فضائیہ کے پاس سب سے کم رینج والا اینٹی ریڈی ایشن میزائل “LD-10” ہے، جس کی رینج 80 کلومیٹر ہے، یہ میزائل چین سے حاصل کیا گیا ہے، پاکستان نے ایسے تقریبا سو میزائل خریدے، چین میں اس میزائل کے کافی کامیاب تجربات کیے گئے تھے جس کے بعد اس کی کارکردگی کو دیکھتے ہوئے پاکستان نے اپنی فضائیہ کو اس میزائل سے لیس کرنے کا فیصلہ کیا۔ یہ میزائل جے ایف سترہ لڑاکا طیاروں سے فائر کیے جا سکتے ہیں۔
PAF LD 10 Missile

پاک فضائیہ کے پاس دوسرا اینٹی ریڈی ایشن میزائل “MAR-1” ہے, یہ میزائل برازیل کا بنایا ہوا ہے، اس کی رینج تقریبا سو کلومیٹر ہے، اس میزائل کو صرف برازیلی فضائیہ اور پاک فضائیہ استعمال کرتے ہیں، پاک فضائیہ کے پاس ان میزائلوں کی تعداد بھی 100 سے 150 کے درمیان ہے، یہ میزائل بھی پاکستانی لڑاکا طیارے جے ایف سترہ سے فائر کیا جا سکتا ہے۔
Pakistan Mar 1 Missile

غیر مصدقہ اطلاعات کے مطابق پاکستانی فضائیہ کے پاس “Cm-102” نامی اینٹی ریڈی ایشن میزائل بھی موجود ہے، جو کہ چینی ساختہ ہے، اور اکثر اوقات مختلف نمائشوں میں پاکستانی لڑاکا طیارے جے ایف سترہ کے ساتھ دیکھا گیا ہے، تاہم اس بارے میں کچھ نہیں کہا جاسکتا کہ پاکستان کی فضائیہ نے اس میزائل کو بھی حاصل کیا یا نہیں، اس میزائل کی رینج کے حوالے سے بھی معلومات میسر نہیں ہیں، تاہم کچھ ویب سائٹس یہ دعویٰ کرتی ہیں کہ اس میزائل کی رینج تقریبا 110 کلومیٹر سے زیادہ ہو سکتی ہے۔
Pakistan CM 102 MissilePakistan JF 17

اگر پاکستان نے یہ میزائل حاصل نہیں کیا تو مستقبل میں جے ایف سترہ بلاک 3 طیاروں کے لیے اس جدید میزائل کو حاصل کیا جا سکتا ہے، کیونکہ پاک فضائیہ کے مطابق نئےجے ایف سترہ بلاک 3 طیاروں کے لیے مزید جدید اور نئے میزائل خریدے اور ملکی سطح پر بنائے جائیں گے۔

پاک فضائیہ کے پاس امریکی ساختہ اینٹی ریڈی ایشن میزائل بھی موجود ہے، اس میزائل کا نام ” AGM-88 HARM ” ہے، اس میزائل کی رینج پاک فضائیہ کے پاس موجود باقی اینٹی ریڈی ایشن میزائلوں کی رینج سے بہت زیادہ ہے، یہ میزائل 150 کلومیٹر کے فاصلے تک کسی بھی جدید ریڈار کو انتہائی پھرتی سے تباہ کر سکتا ہے، یہ میزائل Mac 2 کی رفتار سے پرواز کرسکتا ہے۔ اس میزائل کو ایف 16 طیاروں سے فائر کیا جاسکتا ہے، پاک فضائیہ کے پاس ان میزائلوں کی تعداد کے حوالے سے تفصیلات میسر نہیں ہیں۔
Pakistan Anti Radiation Missile

طیارہ جب کسی ریڈار کی رینج میں آتا ہے تو اس طیارے کی سلامتی کو خطرہ ہوتا ہے، ایسے ہی جب طیارے کے ساتھ اینٹی ریڈی ایشن میزائل موجود ہوں تو ریڈار کی رینج میں آنے کے بعد ریڈار کی اپنی سلامتی بھی خطرے میں پڑ جاتی ہے۔
Pakistan F 16 Up gradation

Facebook Comments
Share This

About yasir

Check Also

بھارت اور اسرائیل آئی ایس آئی کے آگے بے بس

جنگوں کے دوران جاسوسی ہر ملک کا ایک اہم ہتھیار ہوتا ہے۔ یہ آج سے …

error: Content is protected !!