Home / Pakistan Air Force / پاکستان کے زیر استعمال ٹی پی ایس -77 لانگ رینج ریڈار

پاکستان کے زیر استعمال ٹی پی ایس -77 لانگ رینج ریڈار

ٹی پی ایس -77 لانگ رینج ریڈار ہے ۔ یہ اصل میں اے این ایف پی ایس-117 کا ہی نیا ماڈل ہے جسے ٹرانسپورٹ کیا جا سکتا ہے ۔ اس کے مختلف ورژن اور ڈیزائین ہیں ۔ یہ فیز ارے ریڈار ہے جو کہ تھری ڈی ہے ۔

اس کی رینج 400 کلو میٹر ہے ۔اور یہ ایک لاکھ فٹ کی بلندی تک اڑنے والی ہر چیز پر نظر رکھتا ہے ۔ اور جتنے بھی آبجیکٹس آ جائیں سب پر نظر رکھتا ہے ۔ اور اس پر لگے ایک اور سسٹم کی وجہ سے یہ سطح سمندر پر بھی نظر رکھ سکتا ہے ۔امریکی کمپنی لوکھیڈ مارٹن کا بنا یہی ریڈار ہے جو امریکہ کینیڈا کے نارتھ سرویلنس اینڈ وارننگ سسٹم کو چلاتا ہے ۔

اب تک ایسے 134 ریڈار بنائے جا چکے ہیں جو کہ مختلف ممالک میں استعمال ہو رہے ہیں برطانیہ کا مین ائیر ڈیفس ایند سرویلنس بھی یہی ریڈار ہے ۔ اس کے دو طرح کے انٹینا ہوتے ہیں ایک وہ جسے ڈھانپ دیا جاتا ہے ایک جو موبائل ہوتا ہے, اور دوسرہ وہ جسے ڈھانپا نہیں جاتا, ان ریڈاروں کو سی ون تھرٹی طیارے کی مدد سے منتقل کیا جاتا ہے ۔

پاکستان کو اپنے 70ء اور 80ء کی دھائی والے میڈیم رینج ریڈاروں کی جگہ نئے اور لانگ رینج ریڈاروں کی ضرورت تھی ۔ جو پورے مغربی انڈیا پر نظر رکھ سکیں ۔ پچھلے کئی سال سے بھارت کے سارے مغربی کمانڈ کے اڈوں پر چھوٹے ریڈاروں کی وجہ سے نظر رکھنا مشکل ہو رہا تھا ۔

جام نگر, وادسر, اجمیر ,آگرہ ,چندی گڑھ, امبالہ , دہلی , کوٹا , جودھ پور , سورت گڑھ , سرسوا , سری نگر ,کارگل, ہلواڑا بھیشانیا, وغیرہ بھارتی فضائیہ کے ہوائی اڈوں کی لائن ہے جسے ایک ہی سرویلنس کمانڈ کے نیچے لانے کے لیے پاکستان نے یہ راڈار خریدا تاکہ فضائی نگرانی کے ساتھ آتے جاتے آبجیکٹ پر نظر رکھی جا سکے۔

پاکستان نے 2 ستمبر 2003 کو امریکہ سے درخواست کی کہ پاکستان کو 6 ٹی پی ایس -77 ریڈار بیچے جائیں, کانگریس کی منظوری کے بعد پاکستانی انجینیرز کی ٹریننگ اور گراؤنڈ کریو ریڈار آپریٹرز کی ٹریننگ شروع ہوئی, 2007 میں پاکستان میں یہ ریڈار پہنچنا شروع ہوئے جنہیں جلد ہی ملک کے مختلف علاقوں میں نصب کر دیا گیا ۔
Pakistan air defense

اس معاہدے میں اضافی پرزے بھی شامل تھے ۔ اب یہ 6 یا اس سے زائد ریڈار پاکستان کے مختلف علاقوں میں نصب ہیں اور دن رات فضائی نگرانی میں مصروف رہتے ہیں۔

Facebook Comments
Share This

About yasir

Check Also

وہ وقت جب پاکستانی فضائیہ کے میراج طیاروں کو امریکی نہیں پکڑ سکے

پاکستان ائیر فورس کے جنگجو ہوابازوں کو ہدف دیا گیا کہ انہیں بغیر کوئی سراغ …

error: Content is protected !!